تعلیمی ماہرین کو پالیسی سازی کاحصہ بنانے کیلئے ایڈوائزری بورڈ بنانے کافیصلہ

تعلیمی ماہرین کو پالیسی سازی کاحصہ بنانے کیلئے ایڈوائزری بورڈ بنانے کافیصلہ

  



لاہور(لیڈی رپورٹر)جامعات اور سماجی بہبود کے اداروں کے ماہرین کو پالیسی سازی کا حصہ بنانے کیلئے مجوزہ طریقہ کار، پنجاب پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ اور گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور کے باہمی اشتراک سے سوشل پالیسی ایڈوائزری بورڈ اور سوشل پالیسی ایڈوائزری کونسل تھرو ایجوکیشن کے قیام کا فیصلہ کیا گیا۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اصغر زیدی نے پی اینڈ ڈی بورڈ کے چیئرمین حامد یعقوب شیخ سے ملاقات کی۔دونوں اداروں کے سربراہان نے ایڈوائزری بورڈ اور کونسل کے دائرہ کار اور تشکیل پر مشاورت کی۔وائس چانسلر کا کہنا تھا کہ ایڈوائزری بورڈ ایک پالیسی ساز ادارہ ہو گا جبکہ کونسل تحقیق، شواہد، اعدادوشمار اور منصوبوں کی افادیت کا جائزہ لے گی۔پروفیسر اصغر زیدی کا کہنا تھاکہ اس کونسل کے ذریعے ماہرین، محقیقین اور متعلقین پالیسی سازی کا حصہ بنیں گئے

۔وائس چانسلر کا کہنا تھا کہ سوشل سیکٹر میں ترقی کیلئے تحقیق اور شواہد کی بنیاد پر فیصلہ پالیسی لازمی ہے۔ یونورسٹیز، این جی اوز اور سماجی بہبود کے قومی و عالمی اداروں کے متعلقین کونسل کا حصہ ہونگے۔پی اینڈ ڈی بورڈ کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ سوشل پالیسی بورڈ اور کونسل کا قیام 2020 میں عمل میں لایا جائے گا۔اس موقع پر حامد یعقوب کا کہنا تھاکہ سماجی شعبہ میں پالیسی سازی میں تحقیق کی کمی ہے۔مجوزہ مسودے کے مطابق پنجاب گورنر چوہدری محمد سرور کونسل کے سرپرست اعلی ہونگے جس میں تمام سٹیک ہولڈرز شامل ہونگے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1