شہید حکیم محمد سعید نے ملک میں علم و طب کی شعمیں روشن کیں، حکیم عبدالوحید

  شہید حکیم محمد سعید نے ملک میں علم و طب کی شعمیں روشن کیں، حکیم عبدالوحید

  



پشاور(سٹی رپورٹر)ہمدرد فاؤنڈیشن پاکستان کے زیر اہتمام شوریٰ ہمدرد پشاور کا ماہانہ اجلاس گزشتہ روز پشاور کے سروسز کلب میں منعقد ہوا۔ اجلاس کا موضوع”برصغیر میں طب یونانی۔ماضی،حال اور مستقبل۔حکیم محمد سعید کی خدمات“ تھا۔اجلاس کی صدارت اسپیکر شوریٰ ہمدرد پروفیسر ڈاکٹر فخر الاسلام نے کی جبکہ مہمان مقرر سابق صدر نیشنل کونسل فار طب اسلام آباد حکیم عبدالوحید تھے۔ انہوں نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہشہید پاکستان حکیم محمد سعیدنے زندگی کے مختلف شعبوں میں کارہائے نمایاں سرانجام دئیے مگر ان کی زندگی کا سب سے اہم پہلو طب یونانی تھا،طب کے حوالے سے ان کی خدمات کو فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ برصغیر میں طب کو سائنس اور ایجادات سے ہم آہنگ کرنے والی ذات حکیم محمد سعید کی ہے، انہی کی کاوشوں کی بدولت طب کو اپنا اصل مقام ملا اور طب عالمی سطح پر موضوع فکر و تحقیق بنی۔اُن کا کہنا تھا کہ حکومتی سرپرستی حاصل نہ ہونے کے باوجود ہم نے اپنے زور بازو سے طب یونانی کو زندہ رکھا ہوا ہے اور ہماری یہ جدوجہد جاری رہے گی۔اس موقع پر اراکین شوریٰ فاروق احمد جان بابر، سید مشتاق حسین شاہ،عبدالحکیم کنڈی، قاری شاہد اعظم،اسلم خان، پروفیسر روشن خٹک، محترمہ غزالہ یوسف اور کنول آفتاب نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ شہید حکیم محمد سعید صرف حکیم ہی نہیں بلکہ ایک محب وطن پاکستانی بھی تھے انہوں نے نہ صرف طب بلکہ تعلیم کے میدان میں بھی نمایاں خدمات سرانجام دیں اورملک میں علم و طب کی شعمیں روشن کیں وہ اپنے وقت کے عظیم صاحب علم و حکمت تھے۔ان کی خدمات علم و حکمت سے لے کر فہم و ادراک تک پاکستان کے حوالے سے ہمیشہ تاریخ کا روشن باب رہیں گی۔اُن کی زندگی ہمارے لئے مشعل راہ ہے،عصرِ حاضر کے نوجوانوں کوشہید حکیم محمد سعید جیسی عظیم شخصیت کو اپنا رول ماڈل بنانا چاہئیے۔ آخر میں مہمان خصوصی نے شرکاء کے سوالات کے جوابات دئیے

مزید : پشاورصفحہ آخر