کے پی اکنامک ڈویلپمنٹ خصوصی اقتصادی زون شروع کرنے کیلئے تیار

کے پی اکنامک ڈویلپمنٹ خصوصی اقتصادی زون شروع کرنے کیلئے تیار

  



 پشاور(سٹی رپورٹر)وفاقی حکومت کے ساتھ ساتھ صوبائی حکومت خیبر پختونخواہ نے خصوصی اقتصادی زون (SEZ) کی ترقی کو بہت اہمیت دی ہے تاکہ برآمدی ترقی اور روزگار کے مواقع پیدا ہوسکیں۔جو کہ اسٹرٹیجک انداز میں صنعتی شعبے میں متوازن ترقی کے ذریعے پورے صوبے میں معاشی منافع کی یکساں تقسیم کا باعث بنے۔لہذا، پہلے مرحلے میں، رشکئی میں 1000 ایکڑ اراضی کو صوبائی حکومت نے منتخب کیا جس کو وسطی خیبرپختونخوا میں ایک ترجیحی SEZ بنا یا جائے۔ اس منصوبے کو عملی شکل دینے کے لئے، خیبرپختونخوا اکنامک زون ڈویلپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی (کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی) نے چائنہ روڈ اینڈ برج کارپوریشن (سی آر بی سی) کے ساتھ انگیجمنٹ معاہدے پر دستخط کیے جو عوامی جمہوریہ چین کا سرکاری ادارہ ہے۔ رشکئی pSEZ پروجیکٹ کا ایک انوکھا ڈھانچہ ہے جس کی پاکستان میں کوئی مثال نہیں،کیونکہ اسے خیبر پختونخوا پی پی پی ایکٹ 2014 کے تحت پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی) کے موڈ میں تیار کیا گیا ہے، یہ سی پیک کے صنعتی تعاون کے فریم ورک کے تحت ایک ترجیحی SEZ ہے۔لہٰذا، مفصل مذاکرات کی ایک طویل سیریز کے بعد، مراعات کا معاہدہ اور ترقیاتی معاہدہ، جو دو اہم معاہدے ہیں، کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی اور سی آر بی سی کے مابین اتفاق رائے ہوا۔28 نومبر 2018 کو کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی اور سی آر بی سی کے مابین مشترکہ منصوبے کا معاہدہ پہلے ہی دستخط ہوچکا ہے، جس کا مقصد دو فریقوں کے شیئر ہولڈنگ اور اسپیشل پرپز وہیکل (ایس پی وی) کا کام کرنا ہے جس میں رشکئی pSEZ کو ترقی ملے گی۔پی پی پی کمیٹی جو کے پی پی پی ایکٹ 2014 کے تحت ایک اعلی کمیٹی ہے، نے 10 جنوری 2020 کو منعقدہ اپنے اجلاس میں مراعات کے معاہدے کو باضابطہ طور پر منظوری دے دی۔یہ ذکر کرنا مناسب ہے کہ یہ پہلا موقع ہے جب پی پی پی ایکٹ 2014 کے تحت پی پی پی پروجیکٹ کے طور پر کسی منصوبے کی منظوری دی گئی ہے جس میں بین الاقوامی سرمایہ کار شامل ہیں، جس کے نتیجے میں کے پی ازدمک کی ٹیم ان منصوبوں کی منصوبہ بندی کرنے کی صلاحیت کی گنجائش ہے جو خیبر پختونخواہ کے پلاننگ ترقی کے شعبہ کے ساتھ ساتھ مستقبل میں اس طرح کے پروجیکٹوں کوآسانی سے سنبھالنے کے لئے کی پی ازدمک کی ٹیم بھی پیش کی گئی ہے۔پی پی پی کے موڈ کو بروئے کار لا کر صوبائی حکومت اپنے وسائل کو بہتر طریقے سے بروئے کار لاتے ہوئے سرمایہ کاروں کو راغب اور سہولت فراہم کرسکتی ہے۔51جنوری 2020 کو منعقدہ اس اجلاس میں خیبر پختون خوا SEZ اتھارٹی (SEZA) کے بورڈ نے رشکئی PSEZ کے ترقیاتی معاہدے کی سفارش کی تھی۔رشکئی pSEZ ان تین ترجیحی SEZs میں شامل ہے جن پر سی پیک کے دوسرے مرحلے میں توجہ دی جارہی ہے، دوسرے دو ڈھابیجی (سندھ) اور ایم۔3(پنجاب) ہیں۔رشکئی کو پہلے ہی 19 ستمبر 2019 کو جاری کردہ ایک نوٹیفکیشن کے ذریعے فیڈرل بی اوآئی نے SEZ کا درجہ دے دیا ہے۔بجلی اور گیس کی فراہمی کے لئے پی سی ون کو بالترتیب پاور اینڈ پیٹرولیم ڈویژن کی منظوری دے دی گئی ہے۔کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی نے اپنے عزم شیڈول سے پہلے ہی زون تک رسائی روڈ کی تعمیر کا کام شروع کردیا ہے۔توقع ہے کہ طورخم کوریڈور کے ذریعہ وسطی ایشیائی منڈیوں میں 50،000 براہ راست اور 150،000 بالواسطہ ملازمت کی تخلیق اور تجارت اور برآمد کے مواقع سمیت متعدد معاشی فوائد حاصل ہوں گے۔ رشکئی pSEZ ایک عام مقصد SEZ ہے، تاہم، صوبہ خیبر پختون خوا کی ضلعی طاقتوں اور قدرتی وصولی سے فائدہ اٹھانے کے لئے سیکٹر سے متعلق مخصوص SEZ کی منصوبہ بندی کی جارہی ہے تاکہ وہ انھیں ایک انوکھا مسابقتی فائدہ پہنچائیں اس طرح پاکستان کے لئے برآمدی قیادت میں اضافے کے عمل کو تیز کرنا۔اگرچہ یہ ایک پیچید ہ مذاکراتی مراحل تھے، لیکن کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی میں انتظامی ٹیم نے مسٹر عادل صلاح الدین کی سربراہی میں، اس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز (بی او ڈی)، سیکریٹری صنعتوں کے ذریعہ انڈسٹری ڈپارٹمنٹ، مسٹر عامر لطیف اور سی ایم کے معاون خصوصی انڈسٹریز، جناب عبدالکریم خان کے تعاون سے مکمل ہوا۔کے پی ای زیڈ ڈی ایم سی اب قلیل مدت میں مہمند اکنامک زون، اور نوشہرہ توسیع سمیت حطارایس ای زیڈ ایکسٹینشن اور ڈی۔ آئی خان ایس ای زیڈ سمیت مزید صنعتی منصوبے شروع کرنے کے لئے اچھی طرح سے تیار ہے جس کے نتیجے میں یہ صوبہ کے پی کی تیز صنعتی کاری کے مقصد کو پورا کررہا ہے جو کہ کے پی ازدمک کا تخلیقی مینڈیٹ ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...