سال 2020پورے صوبے میں بطورڈ یجیٹل سال منایا جائیگا

      سال 2020پورے صوبے میں بطورڈ یجیٹل سال منایا جائیگا

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)مشیر سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاہے کہ وزیراعلی خیبرپختونخوا محمودخان کی ہدایت کے مطابق سال 2020 پورے صوبے میں بطور ڈیجیٹل سال منایاجائیگا جس کیلئے پالیسیوں کو حتمی شکل دی گئی ہے۔ ڈیجیٹل 2020 کے مطابق پورے صوبے کے تمام محکموں کو ڈیجیٹلائزڈ کردیاجائیگا جس سے دفتری امور میں تیزی آنے کے ساتھ ساتھ تمام کام پیپرلیس ہوجائیگا اور عوام کو بروقت بہترین سہولیات میسرہوگی۔ اسی طرح آئی ٹی اور سائنس کے شعبے میں نوجوانوں کو روزگار کے مواقع بھی فراہم کئے جائیں گے جبکہ درشل اور ڈیجیٹل سٹی پشاور اور ہری پور کے قیام سے ہنرمندوں کو تربیت فراہم کئے جائیں گے۔ وہ ڈیجیٹل خیبرپختونخوا کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔ سیکرٹری سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی ظفرعلی، منیجنگ ڈائریکٹر آئی ٹی بورڈ ڈائریکٹر شہباز خان، ڈائریکٹرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی خالد خان اور پراجیکٹ ڈائریکٹر لینڈریکارڈ کمپیوٹرائزیشن بھی اس موقع پر موجود تھے۔ ضیاء اللہ خان بنگش نے حکام کو سائنس اور آئی ٹی میں جاری منصوبوں کی بروقت تکمیل اور سال 2020 کیلئے نئے منصوبے شروع کرنے کی ہدایت جاری کی۔ انہوں نے کہاکہ جاری منصوبوں پرماہانہ اجلاس ہو گا اور پراگریس میں تیزی لانی ہوگی جبکہ قبائلی اضلاع میں درشل سنٹرز کے قیام کیساتھ ساتھ ہری پور، کوہاٹ اور چترال میں بھی درشل سنٹرز قائم کئے جائیں گے اور پشاور و ہری پور کو ٹیکنالوجی سٹی کا درجہ دے کر کاروباری اشخاص کو سہولیات جبکہ نوجوانوں کو سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی کے میدان میں روزگار کے مواقع فراہم کئے جائیں گے۔ مشیر سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی نے کہاکہ ڈیجیٹل سال 2020 کے تحت ریونیوریکارڈ ڈیجیٹلائزیشن فیز 2 کو مزید 12 اضلاع تک توسیع دی جائیگی جبکہ تمام 19 اضلاع میں اسی سال سروس ڈیلیوری سنٹرز بھی فعال کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ صوبے کے تمام یونیورسٹیوں میں انکوبیشن سنٹرز کے قیام کیساتھ ساتھ تمام ریسرچرز اور سائنسدانوں کا ڈیٹااکٹھا کیا جائیگا جبکہ ریسرچرز کی ہر سطح پر پذیرائی کر کے ان کو مواقع بھی فراہم کئے جائیں گے۔ ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاکہ سال 2020 کے تحت قومی و بین الاقوامی ڈونرز اور انویسٹرز کو ہر قسم کے سہولیات بھی فراہم کئے جائیں گے خیبرپختونخوا کو بہت جلد آئی ٹی حب بنایاجائیگا جس کے دور رس نتائج برآمد ہوں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...