حکومتی کمیٹی کی اتحادی رہنماؤں سے ملاقاتیں،تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی

حکومتی کمیٹی کی اتحادی رہنماؤں سے ملاقاتیں،تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی

  



اسلام آباد/لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی) وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر حکومتی کمیٹی نے بلوچستان عوامی پارٹی سے ملاقات میں تحفظات کو دور کرنے کی یقین دہانی کرا دی۔ حکومتی کمیٹی میں جہانگیر ترین، پرویز خٹک اور ارباب شہزاد شامل تھے جبکہ بلوچستان عوامی پارٹی کی جانب سے خالد مگسی، ِزبیدہ جلال، احسان اللہ ریکی اور دیگر شریک ہوئے۔ بلوچستان عوامی پارٹی نے کہا کہ حکومت کیساتھ بھرپور تعاون کے باجودہ وعدے پورے نہیں کیے گئے، وفاقی کابینہ میں وزارت دی گئی نہ ہی حلقوں کے لیے ترقیاتی فنڈز جاری ہوئے۔حکومتی کمیٹی نے بلوچستان عوامی پارٹی کو یقین دلایا کہ بلوچستان میں مسائل کا خاتمہ وزیر اعظم کی اولین ترجیح ہے، وزیر اعظم جلد بلوچستان کا دورہ کریں گے اور صوبے کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے فنڈز کا اجراء یقینی بنایا جائے گا۔سرکاری ہینڈ آؤٹ کے مطابقپنجاب ہاؤس اسلام آباد میں حکومتی اعلی عہدیداروں اورپاکستان مسلم لیگ(ق) کے رہنماؤں میں اہم ملاقات ہوئی۔ملاقات میں وزیراعلیٰ پنجاب سردا ر عثمان بزدار،وزیر دفاع پرویز خٹک،تحریک انصاف کے سینئر رہنماء جہانگیر ترین،وزیراعظم کے مشیر ارباب شہزاد،پاکستان مسلم لیگ(ق) رہنماء وفاقی وزیر طارق بشیر چیمہ،رکن قومی اسمبلی مونس الٰہی اوردیگر نے شرکت کی۔ملاقات میں باہمی دلچسپی کے ا موراور ورکنگ ریلیشن شپ کو مزید بہتر بنانے کیلئے اقدامات پر تبادلہ خیال کیاگیااور عوام کی فلاح و بہبود کیلئے ورکنگ ریلیشن شپ کو مزید بہتر بنانے پر اتفاق کیا گیا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پرگفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ق) ہماری اتحادی ہے اور رہے گی۔چھوٹے موٹے اختلافات خاندان میں بھی ہوجاتے ہیں۔اختلاف رائے جمہوریت کا حسن ہے۔انہوں نے کہا کہ عوام کی ترقی وخوشحالی کے لئے پاکستان مسلم لیگ(ق) کو ساتھ لے کرچلیں گے۔ غلط فہمیاں پیدا کرنے کی سازشیں کرنے والے کبھی کامیاب نہیں ہوں گے۔پرویز خٹک نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ق) کے ساتھ ہماری ورکنگ ریلیشن ہر آنے والے وقت میں مضبوط سے مضبوط تر ہوگی۔ عوام کوریلیف فراہم کرنے اورعوام کی فلاح وبہبود کیلئے ملکرکام کرتے رہیں گے۔ جہانگیر ترین نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ق) کے ساتھ تعاون جاری رہے گا اور پاکستان مسلم لیگ(ق) کے ساتھ ملکرکام کررہے ہیں اورآئندہ بھی کرتے رہیں گے۔مستقبل میں ہمارا اتحاد پہلے سے زیادہ مضبوط ہوگا۔ مسلم لیگ(ق) کے رہنماؤں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کوئی غلط فہمی میں نہ رہے،تحریک انصاف کے اتحادی ہیں اورہمارا اتحادپہلے سے زیادہ مضبوط ہے۔اتحاد میں رخنہ ڈالنے کی خواہش دلوں میں ہی رہ جائے گی۔ہر مسئلے کو افہام و تفہیم سے حل کرنے میں ہی دانشمندی ہوتی ہے۔

ملاقاتیں /اتفاق

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)مسلم لیگ(ق) اور تحریک انصاف کے درمیان مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے۔نجی ٹی وی ذرائع کے مطابق مسلم لیگ(ق) نے مطالبات پر عمل درآمد کیلئے تحریک انصاف کو ایک ہفتے کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئیکہا ہے کہ مطالبات پر عمل درآمد نہ ہوا تو پی ٹی آئی حکومت کو جھٹکا دے سکتی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ ق لیگ نے حکومت کے سامنے 2 مطالبات رکھے کہ وزارتوں میں مکمل اختیار چاہیے، رکاوٹیں برداشت نہیں کریں گے اور ترقیاتی فنڈز کی فوری فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ملاقات میں چودھری براداران کا پیغام بھی حکومت کو پہنچایا گیا کہ اب حکومت یہ ڈھنڈورا پیٹنا بند کرے کہ مونس الٰہی کو وزارت چاہیئے، مونس کو کوئی وزارت نہیں چاہیے۔حکومتی وفد کیساتھمذاکرات کے بعد میڈیا سے گفتگو میں مسلم لیگ(ق)کے رہنما طارق بشیر چیمہ کا کہنا تھا کہ ہمارے مطالبات تسلیم کیے گئے ہیں، ہمارا اتحاد جاری رہے گا، مطالبات میں ترقیاتی عمل سب سے اہم مطالبہ تھا۔انہوں نے کہا کہ ہمارے مسائل اور تکالیف کے خاتمے سے متعلق بات ہوئی ہے، حکومت نے یقین دہانی کرائی ہے مطالبات پورے ہوں گے۔

نجی ٹی وی/چیمہ

مزید : صفحہ اول


loading...