اربوں روپے کی مبینہ بے ضابطگیاں،وسیم طارق عہدہ سے فارغ،نیئر سعید چیف انجینئر تعینات

اربوں روپے کی مبینہ بے ضابطگیاں،وسیم طارق عہدہ سے فارغ،نیئر سعید چیف ...

  



لاہور(ارشد محمود گھمن /سپیشل رپورٹر)محکمہ سی اینڈ ڈبلیو میں 2 ارب 40کروڑ روپے کی مبینہ بے ضابطگیوں میں ملوث چیف انجینئر وسیم طارق کو حکومت پنجاب نے تبدیل کرکے نیئر سعید کو چیف انجینئر تعینات کردیا۔تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب نے کمیونی کیشن ورکس ڈیپارٹمنٹ (سی اینڈ ڈبلیو)میں 6ماہ قبل محمد طارق وسیم کو گریڈ 20میں ترقی دے کر چیف انجینئر سنٹرل زون لاہور تعینات کیا،،ذرائع کے مطابق وسیم طارق نے اپنے عہدہ کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے 20ارب سے زائد کے ترقیاتی منصوبوں کے ٹینڈرز میں ٹھیکیداروں سے مبینہ طور پر 2فیصد کے حساب سے 40کروڑ روپے کی ایڈوانس کمیشن وصول کی جبکہ اپنے ماتحت ایگزیکٹو انجینئر ز کے ساتھ بھی مبینہ ملی بھگت کرتے ہوئے جاری ترقیاتی منصوبوں میں ناقص میٹریل کا استعمال کرواکر10فیصد کمیشن بھی حاصل کرکے قومی خزانہ کو تقریباً2ارب روپے کا نقصان پہنچایا،ذرائع کے مطابق وسیم طارق نے مبینہ طور پربھاری رقم سے سابق سیکرٹری سی اینڈ ڈبلیو طاہر خورشید کونواز کراپنی تعیناتی کی سمری حکومت پنجاب کو بھجوائی جس پر ان کی تعیناتی عمل میں لائی گئی جبکہ ایک ماہ قبل نئے تعینات ہونے والے چیف سیکرٹری پنجاب میجر(ر) اعظم سلیمان نے سیکرٹری طاہر خورشید کوتبدیل کرکے نئے کیپٹن (ر) اسداللہ خان کوتعینات کردیاجنہوں نے وسیم طارق کی کرپشن اور محکمہ میں پائی جانے والی بے ضابطگیوں پر نوٹس لیتے ہوئے حکومت پنجاب کو مذکورہ چیف انجینئر تبدیل کرنے اور اس کے خلاف کارروائی کی سمری بھجوائی تھی۔اس حوالے سے چیف انجینئر وسیم طارق نے موقف دینے سے انکارکردیا۔

چیف انجینئر/فارغ

مزید : صفحہ آخر