ایمپریس مارکیٹ کو اصلی اور تاریخی حیثیت میں لا رہے ہیں:مرتضٰی وہاب

  ایمپریس مارکیٹ کو اصلی اور تاریخی حیثیت میں لا رہے ہیں:مرتضٰی وہاب

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیراعلی سندھ کے مشیر قانون و ماحولیات اور ترجمان سندھ حکومت بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ شجر کاری سے ہم شہر کا نقشہ بدل دیں گے اور کراچی کی قدیم عمارتوں بشمول ایمپریس مارکیٹ کو اصل شکل میں لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایمپریس مارکیٹ میں شجر کاری مہم کا افتتاح کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ان کے ہمراہ بی وی ایس اسکول کی انتظامیہ اور بچے بھی تھے۔مشیر ماحولیات نے ایمپریس مارکیٹ اور جہانگیر پارک میں پودے لگائے اور اسکول کے بچوں میں گھل مل گئے اور بچوں کو شجرکاری کی افادیت کے بارے میں آگاہی دی کہ شجرکاری ہمارے ماحول کو خوبصورت بناتی ہے۔ہمیں پودے لگانے کے ساتھ ساتھ ان کی دیکھ بھال کرنی ضروری ہے آج بچوں کو اس جگہ لانے کا مقصد شہر کو سرسبز دکھانا ہے۔انہوں نے کہا کہ میں بھی اسی اسکول کا پڑھا ہوں اور میں بچوں میں احساس ذمہ داری اجاگر کرنا چاہتا ہوں۔ہم نے کڈنی ہل میں 25 ہزار درخت لگائے ہیں تاکہ شہریوں کو صحت مند ماحول میسر آسکے۔صوبائی مشیر کے ہمراہ میونسپل کمشنر ڈاکٹر سیف الرحمن، ڈپٹی کمشنر جنوبی ارشاد اور ضلعی انتظامیہ کے افسران بھی موجود تھے۔بعد ازاں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے صوبائی مشیر نے کہا کہ اس بات میں کوئی شک نہیں کہ فیصل واوڈا نے جو عمل کیا وہ انتہائی شرمناک ہے۔تحریک انصاف کو اس طرح کے عمل سے اجتناب کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ گورنر کا کام سیاست کر نا نہیں بلکہ انہیں قانون کا دوبارہ مطالعہ کرنا از حد ضروری ہے ہے۔گورنر کرا چی کیلئے پیکیج کا اعلان کر چکے ہیں مگر ان پر عمل نہیں ہو سکا۔انہوں نے مزید کہا کہ صوبہ سندھ میں ہر شخص عدالت کا دروازہ کھٹکھٹا رہا ہے اور حکومتی امور کو متاثر کیا جا رہا ہے۔اگر میں غیر قانونی حیثیت سے مشیر ہوں تو مجھے ہٹا دیں۔انہوں نے اس مو قع کہا کہ ایم کیو ایم اور جی ڈی اے نے پی ٹی آئی کی جا نب سے وعدے پورے نہ ہونے پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...