جلالپور میں 10افراد قتل‘ دہشتگردی کی دفعات ختم کرنے کے فیصلے کیخلاف درخواست پر فریقین کو نوٹس

  جلالپور میں 10افراد قتل‘ دہشتگردی کی دفعات ختم کرنے کے فیصلے کیخلاف ...

  



ملتان (خبر نگار خصو صی)ہائیکورٹ ڈویثرن بنچ نے جلال پور پیر والا میں رشتے کے تنازعہ پر 10 افراد کو قتل کرنے کے مقدمہ میں دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کے فیصلے کے خلاف درخواست پر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت(بقیہ نمبر31صفحہ7پر)

17 فروری تک ملتوی کردی ہے۔ فاضل عدالت میں مدعی اختر عباس نے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ ملزمان غلام نازک، خرم شہزاد، اسد اور نسیم اختر سمیت 20 ملزمان کے خلاف تھانہ صدر جلال پور پیر والا نے 5 جون 2019 میں مقدمہ درج کیا جس میں الزام عائد کیا گیا کہ رشتے سے انکار کرنے کے تنازعہ پر ملزمان نے عید الفطر کی نماز کے بعد فائرنگ کرکے 10 افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔ جس میں دہشت گردی کی دفعات بھی شامل کی گئی تاہم ملزمان کی جانب سے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں زیر دفعہ 23 اے ٹی اے کی درخواست دائر کی گئی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ مقدمہ میں دہشت گردی کی دفعات شامل کرنا غلط ہے جسے ختم کیا جائے۔ جس پر خصوصی عدالت نے وکلاء دلائل کے بعد دہشت گردی کی دفعہ ختم کرتے ہوئے مقدمہ سیشن کورٹ منتقل کردیا تھا۔ فاضل عدالت عالیہ سے استدعا ہے کہ خصوصی عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے مدعی کی جانب سے ایڈووکیٹ ضیاء الرحمن رندھاوا عدالت میں پیش ہوئے۔

نوٹس

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...