’اگر فوج پر بات کرنا جرم ہے تو پھر ۔۔۔ ‘ریٹائرڈ جرنیل نے حیران کن بات کہہ دی

’اگر فوج پر بات کرنا جرم ہے تو پھر ۔۔۔ ‘ریٹائرڈ جرنیل نے حیران کن بات کہہ دی
’اگر فوج پر بات کرنا جرم ہے تو پھر ۔۔۔ ‘ریٹائرڈ جرنیل نے حیران کن بات کہہ دی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)دفاعی تجزیہ کار میجر جنرل (ر)اعجاز اعوان نے کہا ہے کہ اگر فوج کے ادارے پر بات کرنے سے جرم ثابت ہوتاہے یا یہ جرم ہے تو پھر آدھے سے زیادہ سیاستدان اسمبلیوں میں نہیں ہونے چاہئے ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”آن دافرنٹ“میں گفتگو کرتے ہوئے میجر جنرل (ر) اعجاز اعوان نے کہا کہ اگر ایک وفاقی وزیر کسی ٹاک شو میں فوجی بوٹ لاکر رکھ تو یہ وزیر اعظم کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے وزراءکیلئے کوڈ آف کنڈکٹ بنائیں۔

میجر جنرل (ر)اعجاز اعوان کا کہنا تھاکہ ضابطہ اخلاق اس بات کی اجازت نہیں دیتا ، ایک ایشو کو متنازعہ بنایاگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فیصل واوڈا نے غلط کام کیا ، ان کی کوئی تعریف نہیں کرتا ، ان کوسز ا مل گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر فوج کے ادارے پر بات کرنے سے جرم ثابت ہوتاہے یا یہ جرم ہے تو پھر آدھے سے زیادہ سیاستدان اسمبلیوں میں نہیں ہونے چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں تو عدالتوں کو بھی فیملی کورٹس کہا جاتا رہاہے ۔

مزید : قومی