جواد احمدبھارت میں پنجابی فلم ایوارڈ زمیں بہترین موسیقار کے لئے نامزد

جواد احمدبھارت میں پنجابی فلم ایوارڈ زمیں بہترین موسیقار کے لئے نامزد


لاہور(فلم رپورٹر)معروف گلوکار ،میوزک ڈائریکٹر اور پروڈیوسر جواداحمد نے 2010 میں پہلی پاک بھارت مشترکہ پروڈکشن پنجابی فلم ’’ورثہ‘‘ بنائی۔اس فلم کا جواد احمدنے نہ صرف میوزک دیا بلکہ اس کے پروڈیوسرز میں سے بھی ایک ہیں۔اس فلم کامیوزک پاکستان اور بھارت میں یکساں مقبول ہوا۔جس پر جواد احمد کو بھارت میں پنجابی فلم ایوارڈز میں بہترین موسیقار کے لئے نامزد بھی کیا گیا۔اسی فلم کا ایک گانا (میں تینوں سمجھاواں کی) پاکستان اور بھارت میں بہت بڑا ہٹ ہوا۔اس گانے کی شاعری انیس احمد (مرحوم) نے کی اورکمپوزیشن اور ارینجمنٹ ساحر علی بگا نے دی تھی اوراسے استاد راحت فتح علی خاں اور فرح انور کی آواز میں ریکارڈ کیاگیا تھا۔ اب مشہور بھارتی فلم میکر کرن جوہر نے اس گانے کے حقوق جواد احمد سے اپنی نئی فلم ’’ہمپٹی شرما کی دلہنیا‘‘ کے لئے حاصل کئے ہیں۔ اب اس گانے کو ارجیت سنگھ اور شریہ گھوشال کی آواز میں ریکارڈ اور اسے ورن دھون اور آلیہ بھٹ پر فلمایا گیا ہے۔بطور میوزک ڈائریکٹرجواد حمد بھی اس فلم کے میوزک ڈائریکٹر میں شامل ہیں۔ اس سے پہلے فلم میکر مہیش بھٹ نے اپنی فلم ’’وہ لمحے‘‘کے لیے جواداحمد کا مشہور گانا (بن تیرے کیا ہے جینا)لیا گیا۔جو بہت بڑاہٹ ثابت ہوا۔

مزید : کلچر