قطر امریکہ سے11ارب ڈالر کا جنگی سازوسامان خرید ے گا

قطر امریکہ سے11ارب ڈالر کا جنگی سازوسامان خرید ے گا

 واشنگٹن( آن لائن )قطر اور امریکا کے درمیان گیارہ ارب ڈالرز مالیت کا دفاعی سودا طے پاگیا ہے جس کے تحت قطر امریکا سے پیٹریاٹ میزائل بیٹریز اور اپاچی لڑاکا ہیلی کاپٹر خرید کرے گا۔قطر کے وزیرمملکت برائے دفاع میجر جنرل حمد بن علی العطیہ اور امریکی وزیردفاع چَک ہیگل نے واشنگٹن میں مذاکرات کے بعد اس دفاعی معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔یہ امریکا کا سال 2014ءمیں پہلا بڑا دفاعی سودا ہے۔اس معاہدے کے تحت امریکا قطر کو دس راڈارز ،حملہ آور میزائلوں کو ناکارہ بنانے والے پیٹریاٹ نظام ،چوبیس اپاچی لڑاکا ہیلی کاپٹرز اور جاولین ٹینک شکن میزائل فروخت کرے گا۔امریکی محکمہ دفاع پینٹاگان کے حکام نے اپنے تئیں یہ دعویٰ کیا ہے کہ قطر اس میزائل دفاعی نظام پر یہ بھاری سرمایہ کاری ایران سے درپیش خطرے سے نمٹنے کے لیے کررہا ہے۔ایران نے طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائل تیار کررکھے ہیں لیکن اس کا یہ کہنا ہے کہ اس کے میزائل خلیجی ریاستوں کے لیے نہیں ہیں۔قطر برطانوی اور فرانسیسی دفاعی اداروں کے بجائے امریکی طیارہ ساز کمپنی بوئنگ سے لڑاکا جیٹ طیارے خرید کرنے کا بھی جائزہ لے رہا ہے۔پینٹاگان کے حکام کے مطابق اس دفاعی سودے کی تکمیل سے قطر اور امریکا کے درمیان سلامتی اور سفارتی شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو فروغ ملے گا اور یہ خطے میں امریکا کے اثرورسوخ میں اضافے کے لیے بھی اہم ثابت ہوگا۔واضح رہے کہ امریکا اور قطر ایک دوسرے کے اہم اتحادی ملک ہیں لیکن ان میں شام میں صدر بشارالاسد کی حکومت کے خلاف برسرپیکار بعض باغی گروپوں کی حمایت اور انھیں مسلح کرنے کے حوالے سے اختلافات پائے جاتے ہیں۔امریکا ان باغی گروپوں کو راسخ العقیدہ اور کٹڑ خیال کرتا ہے۔

مزید : عالمی منظر