ریونیو ممبران کی غفلت،300سے زائد کیسز کے تحریری آرڈر جار ی نہ کئے جا سکے

ریونیو ممبران کی غفلت،300سے زائد کیسز کے تحریری آرڈر جار ی نہ کئے جا سکے

لاہور (اپنے نمائندے سے )بورڈ آف ریونیو پنجاب کے ممبروں کی غفلت کے باعث 300سے زائد کیسز کے فیصلے اناﺅنس ہونے کے باوجود تحریری آرڈرجاری نہیں کیے جاسکے پنجاب بھر سے انصاف کے حصول کے لیے آنیوالے شہری ممبران صاحبان کی افسر شاہی کے سامنے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوگئے خوار ی اور انتظار شہریوں کا مقدر بن گئی فل بورڈ میں کی جانےوالی سرزنش بھی کسی کام نہ آئی روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق بورڈ آف ریونیو پنجاب ادارے میں 300سے زائد کیسز بھی دیکھنے میں آئے ہیں جن کے فیصلے ہوئے سالہاسال گزر چکے ہیں مگر ان کے تحریری آڈر آج تک جاری نہیں کیے جاسکے ہیں جبکہ اسی دوران متعلقہ ممبران صاحبان ایسے بھی ہیں جن کے تبادلے ہوچکے ہیں اور وہ اپنے فیصلوں کی فائل بھی اپنے ساتھ لے گئے ہیں اطلاعات کے مطابق ممبر جوڈیشل 1کی عدالت میں 56سے زائد کیسز کے فیصلے الاﺅنس کیے گئے ہیں تاہم کوئی تحریری آڈر جاری نہیں کیا گیا اسطرح ممبر جوڈیشل 2کی عدالت میں 5ممبر 3کے پاس 113ممبر کالونی کے پاس 50اور ممبر کنسولیڈیشن کی عدالت سے 60کے قریب فیصلے اناﺅنس کئے گئے ہیں مگر تاحا ل کسی ایک ممبر کی عدالت سے بھی تحریری آڈر جاری نہیں کیے جاسکے جس سے شہریوں کی بڑی تعداد میں بے چینی کی لہر دوڑ چکی ہے شہری محمد اکرم ،زاہد حسین ،محمد اسلم ،چوہدری شفیع ،آغاخان نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے آگاہی دی کہ عرصہ کئی ماہ سے انتظار کی سولی پر لٹکے ہوئے ہیں افسوس ناک امر یہ ہے کہ ریونیو کی سپریم عدالتوں کے جج صاحبان ایسی سنگین غلطیاں اور لاپرواہی پر عمل پیرا ہیں جن کا خمیازہ برائے راست عوام الناس کو اٹھانا پڑ رہا ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1