پاکستان اور کشمیر کا تعلق جسم اور روح کی مانند ہے،ڈاکٹر مجیدنظامی

پاکستان اور کشمیر کا تعلق جسم اور روح کی مانند ہے،ڈاکٹر مجیدنظامی

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) پاکستان اور کشمیر کا تعلق جسم اور روح کی مانند ہے پاکستان کی بقاءکی خاطر اس کے ساتھ کشمیر کا الحاق ناگزیر ہے ہم جہاد کی راہ پر چل کر ہی کشمیر کو آزاد کرا سکتے ہیںکیونکہ ہندو صرف اور صرف طاقت کی زبان سمجھتا ہے ان خیالات کااظہار تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن ،ممتاز صحافی و چیئرمین نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ ڈاکٹر مجید نظامی نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان، شاہراہ قائداعظمؒ لاہور میں” یوم شہدائے کشمیر“ کے سلسلے میں شہدائے کشمیر کی لازوال قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کےلئے منعقدہ خصوصی نشست کے شرکاءکے نام اپنے خصوصی پیغام میں کیانشست کی صدارت سابق چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت چیف جسٹس (ر)میاں محبوب احمد نے کی جبکہ اس موقع پر جسٹس(ر)منیر احمد مغل، بیگم ثریا کے ایچ خورشید، مولانا محمد شفیع جوش، بیگم مہناز رفیع،صوبائی پارلیمانی سیکرٹری رانامحمد ارشد،ایڈیٹر روزنامہ دن میاں حبیب اللہ، جسٹس(ر)شریف حسین بخاری،فاروق خان آزاد ، مرزا محمد صادق جرال ،سید نصیب اللہ گردیزی،میجر(ر)صدیق ریحان،نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ کے سیکرٹری شاہد رشید سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے خواتین و حضرات کثیر تعداد میں موجود تھے الحاج اختر حسین قریشی نے بارگاہ رسالت مآب میں ہدیہ عقیدت پیش کیا نظامت کے فرائض پروفیسر لطیف نظامی نے انجام دیے نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ کے سیکرٹری شاہد رشید نے ڈاکٹر مجید نظامی کا خصوصی پیغام حاضرین کو پڑھ کر سنایا ڈاکٹر مجید نظامی نے اپنے خصوصی پیغام میں کہا کہ پاکستان اور کشمیر کا تعلق جسم اور روح کی مانند ہے پاکستان کی بقاءکی خاطر اس کے ساتھ کشمیر کا الحاق ناگزیر ہے کشمیر مذہبی‘ تاریخی‘جغرافیائی غرضیکہ ہر لحاظ سے پاکستان کا حصہ ہے اس کے بغیر پاکستان نامکمل ہے ہماری سیاسی و عسکری قیادت کو یہ حقیقت ہرگز فراموش نہیں کرنی چاہئے کہ بھارت پاکستان کو بتدریج ریگستان میں تبدیل کرنے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے۔ اگر ہم نے لالہ جی کا ہاتھ نہ روکا تو آئندہ دس پندرہ سالوں میں ہمارا حال ایتھوپیا اور صومالیہ جیسے قحط زدہ ملکوں جیسا ہو جائے گا جب تک ہم جہاد کا راستہ نہیں اپناتے‘ ہندو بنیے کا دماغ درست نہیں ہو گاچیف جسٹس(ر)میاں محبوب احمد نے اپنے صدارتی خطاب میں کہا جو قومیں اپنے شہداءاور اسلاف کو یاد نہیں رکھتیں وہ مٹ جایا کرتی ہیںآج تجدید عہد کا دن ہے۔تقسیم ہند کے وقت ہندوﺅں اور انگریزوں کی سازشوں سے کشمیر پاکستان کاحصہ نہ بن سکا اور انڈیا نے اس پر قبضہ کر لیا۔بیگم ثریا کے ایچ خورشید نے کہا کہ ہر پاکستانی کے دل میں کشمیر دھڑکتا ہے قومیں قربانیوں کی بدولت ہی زندہ رہتی ہیںجسٹس(ر)منیر احمد مغل نے کہا کہ 13جولائی1931ءکو کشمیری نوجوانوں نے اذان کو مکمل کرنے کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا۔اسلام کی خاطر اپنی جانیں پیش کرنیوالے مجاہد آج بھی موجود ہیں۔دنیا میں مسلمانوں پر مظالم ڈھائے جارہے ہیں لیکن مجھے یقین ہے کہ ایک دن آزادی کی جنگ لڑنے والے مسلمانوں کو ضرور آزادی ملے گی ۔بیگم مہنازرفیع نے کہا کہ کشمیری اور فلسطینی مسلمانوں پر مظالم ڈھائے جارہے ہیں لیکن عالم اسلام خاموش ہے یہ لمحہ فکریہ ہے مولانا محمد شفیع جوش نے کہا کہ کشمیری آزادی کی خاطر آج بھی لازوال قربانیاں دے رہے ہیں اور کشمیر کی آزادی تک یہ تحریک جاری رہے

مزید : میٹروپولیٹن 1