2 بچوں سمیت ماں اغوا پولیس نے گمشدگی کی رپورٹ درج کر لی متاثرہ شخص دربدر

2 بچوں سمیت ماں اغوا پولیس نے گمشدگی کی رپورٹ درج کر لی متاثرہ شخص دربدر

                                لاہور(بلال چودھری)تھانہ غازی آباد پولیس نے 2بچوں سمیت اغواءہونے والی ماں کے اغواءکا مقدمہ درج کرنے کی بجائے گمشدگی رپورٹ درج کرلی، بیوی اور بچوں کی تلاش میں دھکے کھانے والے شخص کو اپنی مدد آپ کے تحت تلاش کرنے کا مشورہ ،۔ متاثرہ شخص معصوم بچوں اور بیوی کی بازیابی کے لئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہوگیا لیکن پولیس کارروائی کرنے کی بجائے لیت ولعل سے کام لے رہی ہے ۔عثمان نگر گلی نمبر 3کے محمد عدیل کے مطابق اس کی بیوی سعیدہ اپنے2 بچوں علی رضاءاور لائبہ کے ہمراہ دوپہر 12بجے کے قریب رکشہ میں سوار ہو کر مغل پورہ ڈرائی پورٹ کے قریب رہائش پذیر اپنی والدہ کے گھرکے لیے نکلی تھی لیکن جب وہ کام سے گھر پہنچا تو سسرال فون کرنے پر انہوں نے بتایا کہ وہ یہاں نہیں آئے جس پر وہ پریشان ہوگیا جبکہ ہمسایوں سے پوچھنے پر پتہ چلا کہ سعیدہ اور دونوں بچے ایک رکشہ میں بیٹھ کر گھر سے گئے تھے ۔بعدازاں جب پولیس کو اطلاع دی گئی تو انہوں نے ٹال

 مٹول سے کام لینا شروع کردیا ،2دن تک تھانے کے چکر لگا لگا کر دھکے کھانے کے بعد گزشتہ روز پولیس نے اغواءکا مقدمہ درج کرنے کی بجائے گمشدگی کی رپورٹ درج کرکے اپنی ذمہ داری پوری کردی ہے۔ متعلقہ پولیس سے رابطہ کیا گیا تو ڈیوٹی پر موجود محرر نے "پاکستان"سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ رپورٹ درج کرلی ہے جس کے بعد مزید قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ مغویہ سعیدہ کے شوہر عدیل نے بتایا کہ اس کا اپنی بیوی کے کوئی جھگڑا بھی نہیں ہواتھاکہ وہ روٹھ کر کہیں چلی جائے اور نہ ہی اس کی کسی سے کوئی دشمنی ہے لیکن اسے شبہ ہے کہ اس کی بیوی کو نامعلوم افراد نے اغواءکیا ہے لیکن پولیس اسے تلاش کرنے کی بجائے طفل تسلیاں دے رہی ہے ۔متاثرہ شخص نے آئی جی پنجاب و دیگر اعلی حکام سے اپیل کی ہے کہ اس کی بیوی اور بچوں کو بازیاب کروا کر اس کے حوالے کیا جائے اور اس میں ملوث افراد کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

 

مزید : علاقائی