خاتون تین سال تک اپنی مردہ ماں کے ڈھانچے کے ساتھ سوتی رہی

خاتون تین سال تک اپنی مردہ ماں کے ڈھانچے کے ساتھ سوتی رہی

نیویارک (نیوز ڈیسک) دنیا میں اپنی رونقوں اور روشنیوں کی وجہ سے مشہور شہر نیویارک کے ایک تاریک گھر میں ایک نوجوان خاتون عرصہ تین سال سے اپنی مردہ ماں کے ڈھانچے کے ساتھ سوتی رہی اور اس کے ساتھ بیٹھ کر ہی کھانا کھاتی رہی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ وہ گھر کے اندر کا خوفناک ماحول دیکھ کر دہشت زدہ رہ گئے۔ بروکلین کے علاقہ میں مقیم 28 سالہ چاوا سڑن کے ہمسایوں نے گھر سے عجیب و غریب بدبو آنے کی شکایت کی تھی جس پر پولیس نے کارروائی کی۔ پولیس کے پہنچنے پر جاوا نے دروازہ کھولنے سے انکار کردیا اور وہ چلاتی رہی کہ وہ اپنے آپ کو ہلاک کرنا چاہتی ہے۔ پولیس جب گھر کے اندر پہنچی تو خاتون اپنی ماں کے ڈھانچے کے پاس بیٹھی تھی اور اس نے اسے چھوڑنے سے انکار کردیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ چاوا کی والدہ 61 سالہ سوزی روز نتھال کا انتقال تین سال پہلے ہوا تھا۔ ان تین سالوں کے دوران اس کا جسم گل سڑھ گیا تھا اور باقی صرف ہڈیوں کا پنجرہ رہ گیا تھا لیکن اس کی بیٹی نے یہ تین سال اپنی ماں کی لاش اور ہڈیوں کے ساتھ ہی گزارے تھے۔ وہ رات کو سوتے وقت بھی ماں کے ڈھانچے کے پاس لیٹتی اور کھانے کے وقت بھی اس کے نزدیک بیٹھتی۔ چاوا نے ماں کی وفات کے بعد گھر سے باہر جانا بند کردیا تھا اور کوئی رشتہ دار اسے وقتاً فوقتاً گھر کے باہر سے کھانا دے کر چلاجاتا تھا تاہم کسی کو گھر میں لاش کی موجودگی کے بارے میں پتا نہیں تھا۔ پولیس نے خاتون کو نفسیاتی امراض کے ہسپتال بھیج دیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر