جماعت اسلامی نے تحفظ پاکستان ایکٹ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا، کالعدم قرار دینے کی استدعا

جماعت اسلامی نے تحفظ پاکستان ایکٹ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا، کالعدم قرار ...
جماعت اسلامی نے تحفظ پاکستان ایکٹ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا، کالعدم قرار دینے کی استدعا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )جمشید دستی کے بعد جماعت اسلامی نے بھی تحفظ پاکستان ایکٹ کو عدالت میں چیلنج کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے توفیق آصف ایڈووکیٹ اور شیخ احسن الدین کی وساطت سے تحفظ پاکستان ایکٹ کے خلاف درخواست دائر کی۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ تحفظ پاکستان ایکٹ ملک کے آئین میں تفویض کردہ بنیادی انسانی حقوق کے متصادم ہے،اس قانون کے تحت پولیس کو ایسے اختیارات تفویض کئے گئے ہیں جس کے تحت اسے سیاسی مخالفین کے خلاف بھی استعمال کیا جاسکے گاحالانکہ آئین کی رو سے بنیادی انسانی حقوق سے متصادم کوئی بھی قانون نہیں بنایا جاسکتا۔ اس لئے عدالت عظمیٰ سے استدعا ہے کہ وہ تحفظ پاکستان ایکٹ کو کالعدم قرار دے۔درخواست دائر کرنے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے شیخ احسن الدین نے کہا کہ تحفظ پاکستان ایکٹ غیر انسانی اور جرم سے قبل سزا دینے کے مترادف ہے، پولیس کو بغیر وارنٹ کسی کے گھر میں داخل ہونے کا اختیاردینا غیر اسلامی ہے، جماعت اسلامی نے یہ بات محسوس کی کہ ایکٹ اسلامی شعائر کے خلاف ہے اور اسی لئے سپریم کورٹ سے رجوع کیا گیا ہے۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں