بس، کوچز، ویگنوں، آٹو رکشوں اور موٹر سائیکل میں ایل پی جی کا استعمال غیر قانونی قرار

بس، کوچز، ویگنوں، آٹو رکشوں اور موٹر سائیکل میں ایل پی جی کا استعمال غیر ...
بس، کوچز، ویگنوں، آٹو رکشوں اور موٹر سائیکل میں ایل پی جی کا استعمال غیر قانونی قرار

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے مسافر بس، کوچز، ویگنوں، آٹو رکشوں اور موٹرسائیکل میں ایل پی جی کے استعمال کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔ یہ فیصلہ وفاقی حکومت کی منظوری کے بعد کیا گیا ہے جبکہ خلاف ورزی کے مرتکب لائسنس ہولڈرز کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اوگرا کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں بتایا گیا ہے کہ وفاقی حکومت نے ایل پی جی رولز 2002ءمیں ترمیم کی منظوری دی جس کے تحت ایل پی جی کی فلنگ اور استعمال غیر قانونی قرار دیا گیا ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق ایل پی جی بلند شعلے والی گیس ہے جس کا موٹر سائیکلوں اورگاڑیوں میں استعمال انتہائی خطرناک ہے۔ اوگرا کے لائسنس ہولڈرز کو ایسی گاڑیوں میں ایل پی جی بھرنے سے روک دیا گیا ہے۔ دوسری جانب چیئرمین ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرزایسوسی ایشن عرفان کھوکھر نے اوگرا کی پابندی مسترد کردی ہے اور کہا ہے کہ کراچی میں ٹرانسپورٹ 300 جبکہ لاہور میں 600 ٹن ایل پی جی استعمال کرتی ہے، پابندی ختم نہ کی گئی تو اوگرا کا گھیراو¿ کریں گے اور دھرنا دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں گاڑیوں میں ایل پی جی کا استعمال ہورہا ہے اور پاکستان میں اوگرا نے ہی پبلک ٹرانسپورٹ میں ایل پی جی فلنگ کیلئے لائسنس جاری کئے۔ انہوں نے کہا کہ اوگرا عوام کو سستا ایندھن استعمال کرنے سے نہیں روک سکتی۔

مزید : بزنس