سعودی عرب‘نئی نسل کو انتہا پسندی سے بچانے کیلئے ہنگامی پروگرام کانفاذ

سعودی عرب‘نئی نسل کو انتہا پسندی سے بچانے کیلئے ہنگامی پروگرام کانفاذ

  

جدہ (بیوروچیف محمد اکرم اسد )سعودی وزارت تعلیم نے نئی نسل کو انتہا پسندی سے بچانے کے لئے سکولوں میں ہنگامی پروگرام کے نفاذ کے احکام جاری کر دیئے ہیں ، اس کے ذریعے سعودی معاشرے کو درپیش دہشتگردوں اور مجرمانہ سرگرمیوں ، چیلنجوں اور خطرات کی ناکہ بندی کیلئے پہلا فیلڈ پروگرام روبہ عمل لایا جائے گا ۔ ہر علاقے کے تعلیمی اداروں میں اس مقصد کے لئے خصوصی کمیٹیاں قائم کر دی گئی ہیں جن میں محکمہ تعلیم کے ڈائریکٹر ، اسلامی آگاہی ادارے کے ڈائریکٹر ، طلبہ کی غیر نصابی سرگرمیوں کے شعبہ کے ڈائریکٹر اور تربیتی ابلاغ کے ڈائریکٹر اور اس کے ارکان شامل ہیں ۔ سعودی عرب کے 13صوبوں اور کمشنریوں میں 45ادارے قائم ہیں ان سب کو انتہا پسندی سے بچانے والے ہنگامی پروگرام کے نفاذ کا پابند بنایا گیا ہے ۔ ایک سعودی اخبار نے اسکی تفصیلات دیتے ہوئے واضح کیا ہے کہ اس پروگرام کے تحت طلبہ و طالبات کو اعتدال و میانہ روی کا عادی بنانے کیلئے بامقصد مکالمے کرائے جائیں گے ۔ طلبہ و طالبات کو انتہا پسند انہ افکار کے خطرات سے بچایا جا ئے گا ۔ حب الوطنی کے جذبات راسخ کئے جائیں گے ، کثیرالثقافتی معاشرے کے فوائد سے نئی نسل کوآگاہ کیا جائے گا ۔اس مقصد کے لئے اعلی سطح کمیٹی کا اجلاس منعقد کیا جا چکا ہے کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹر یوسف الشوینی نے بتایا کہ ان کے ہاں بامقصد مکالمے کی حوصلہ افزائی شروع کر دی گئی ہے ۔ تعلیمی سال کے شروع میں ورکشاپ منعقد کئے جائیں گے ، طلبا و طالبات کے علاوہ ماہرین کو پروگرام میں شریک کیا جائے گا ۔ طلبا و طالبات کے ذہنوں میں خلفشار پیدا کرنے والے افکار و خیالات کی اصلاح ٹھوس بنیادوں پر کی جائیگی۔

ہنگامی پروگرام

مزید :

صفحہ آخر -