تونسہ شریف اقلیتی عبادت گا کے باہر کانسٹیبل کو زخمی کرنیوالا مر کزی ملزم گرفتار

تونسہ شریف اقلیتی عبادت گا کے باہر کانسٹیبل کو زخمی کرنیوالا مر کزی ملزم ...

  

لاہور(وقائع نگارخصوصی)ضلع ڈی جی خان کے علاقے تونسہ شریف میں 11جولائی صبح چاربجے اقلیتی عبادت گاہ کے باہر نماز فجر کے دوران چارمسلح افراد نے عباد ت گاہ کے اندر گھسنے کی کوشش کی جسے ڈیوٹی پر موجود پولیس کانسٹیبل ارشاداور سیکیورٹی Volunteer نے روکا جس پر مسلح افراد نے کانسٹیبل ارشاد پر فائرنگ شروع کر دی جس سے اس کے پیٹ میں گولیاں لگیں۔ دہشت گردرائفل چھین کر فرار ہو نے میں کامیاب ہو گئے۔ اس دوران ڈی پی او غلام مبشر میکن اور ان کی ٹیم موقع پر پہنچی اور سی سی ٹی وی فوٹیج اور حساس اداروں کی معاونت سے 72گھنٹوں کے اندر ملزموں کو ٹریس کر لیا اور مرکزی ملزم حنیف کو گرفتار کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ گرفتار ملز م نے دوران تفتیش یہ بتایا کہ اس کا تعلق تحریک طالبان پاکستان کے الفاروق گروپ سے ہے اوراس نے اقلیتی عبادت گاہ کے اندر موجودافراد کو ٹارگٹ کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔ گرفتار کیے گئے دہشت گرد کے قبضے سے دہشت گردی کے لئے مواد کی تیاری ، خود کش جیکٹوں کے فارمولے بنانے کا لٹریچر اور ایک کمپیوٹر برآمد کر لیا۔جس میں جہادی لٹریچر اور منافرت انگیز میٹریل saveتھا۔دوران تفتیش اس دہشت گرد کی اطلاعات اور نشاندہی پر پولیس اور حساس ادارے باقی دو دہشت گردوں تک پہنچنے میں بھی کامیاب ہو گئے جن کا تعلق استاد اسلم گروپ، پنجابی طالبان سے ہے۔ ان دہشت گردوں کے قبضے سے ایک کلاشنکوف بمعہ 30گولیاں، دو ہینڈ گرنیڈ اور 9ایم ایم پسٹل بمعہ70 گولیاں بر آمد کر لی گئیں۔پولیس اور حساس اداروں کی گرفتار کیے گئے ان دہشت گردوں سے تفتیش جاری ہے جبکہ دیگر دہشت گردوں کی گرفتاری کے لئے چھاپوں کا سلسلہ جاری ہے ،آئی جی پنجاب، مشتاق احمد سکھیرا نے ڈی پی او اور ان کی ٹیم کی کارکردگی کو سراہا ہے۔

گرفتار

مزید :

صفحہ آخر -