پی اے سی کا رزلٹ قومی صحت اور مختلف اداروں کے آڈٹ ریکارڈ کی گمشدگی کا نوٹس

پی اے سی کا رزلٹ قومی صحت اور مختلف اداروں کے آڈٹ ریکارڈ کی گمشدگی کا نوٹس

  

اسلام آباد(آئی این پی)پبلک اکاونٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی نے وزارت نیشنل ہیلتھ سمیت مختلف اداروں کے آڈٹ ریکارڈ کی گمشدگی کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ڈیولوشن سیل کے افسران کو ہدایت کی ہے کہ 15روزکے اندر اندر تمام محکموں کو ان کا سابقہ ریکارڈ فراہم کریں بصورت دیگر کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔بدھ کو ذیلی کمیٹی کا اجلاس کنوینیر شاہدہ اختر علی کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاوس میں ہوا۔ اجلاس میں آڈٹ حکام نے بتایا کہ وزارت قومی صحت کے پاس سابقہ ریکارڈ موجود نہ ہونے کی وجہ سے گذشتہ 15سال سے آڈٹ اعتراضات ختم نہیں ہو رہے ہیں جس پر وزارت نیشنل ہیلتھ کے سیکرٹری نے بتایا کہ ہماری وزارت ڈیولوشن کے بعد دوبارہ بنائی گئی ہے اور ہمارا سابقہ تمام ریکارڈ ڈیولوشن سیل کے پاس چلا گیا تھا ہم نے انہیں کم از کم14بار خط لکھا ہے کہ ہمیں ریکارڈ فراہم کیا جائے مگر ابھی تک ریکارڈ نہیں ملا ہے جس پر ڈیولوشن سیل کے افسران نے بتایا کہ ہمارے پاس کئی وزارتوں کا ریکارڈ مختلف جگہوں پر پڑا ہوا ہے ہم نے تمام متعلقہ اداروں کو خطوط لکھے ہیں کہ اپنا ریکارڈ لے لیں۔ انہوں نے بتایا کہ ہم نے وزارت نیشنل ہیلتھ کو 8ہزار کے قریب فائلیں بھجوائی ہیں جس پر کمیٹی کے رکن میاں عبدالمنان نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ بدقسمتی سے پاکستان کی آزادی کے بعد تمام ریونیو اور دیگر ریکارڈ ہندوستان سے پاکستان منتقل ہوگیا تھامگر یہاں پر ایک ادارے سے دوسرے ادارے کو ریکارڈ نہیں دیا جا رہا ہے کیا ریکارڈ حاصل کرنے کیلئے ہمیں یو این او جانا پڑے گا۔

پی اے سی

مزید :

صفحہ آخر -