ملک دشمن قوتوں کا قلع قمع بہت ضروری ہو چکا ہے،پیر منور حسین شاہ

ملک دشمن قوتوں کا قلع قمع بہت ضروری ہو چکا ہے،پیر منور حسین شاہ

  

لاہور (پ ر) دہشت گردی میں وہ قوتیں ملوث ہیں جو نہیں چاہتیں کہ پاکستان ترقی کرے‘ آج ملک دشمن عناصر پھر سے سرگرم ہو گئے ہیں‘ کراچی اسٹاک ایکسچینج پر حملہ اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے‘ ان کا فوری قلع قمع کرنا بہت ضروری ہے‘ شدت پسند گروہوں کی کارروائیوں کو بھی روکنا ہو گا‘ ان خیالات کا اظہار سجادہ نشین حضرت امیر ملت پیر سید منور حسین شاہ جماعتی نے قصور میں آستانہ عالیہ خواجہ دائم الحضوری قصوری کے زیراہتمام سیدہ کائنات کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سیدہ کائنات سلام اللہ علیہا‘ سیدنا ابوبکر صدیق اور دیگر صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کی عزت و ناموس اور شان و عظمت کے حوالے سے کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا، انہوں نے کہا کہ گستاخانِ اہل بیت و صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کیخلاف حکومت کو خود موثر کارروائی کرنا ہو گی تاکہ آئندہ کسی کو اس طرح کی مکروہ حرکت کرنے کی جرا ¿ت نہ سکے۔ انہوں نے کانفرنس کے شرکاء پر زور دیا کہ ایسے گستاخان کی مذموم حرکات کیخلاف مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنے سے ہی کامیابی حاصل ہو گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ دہائیوں کے بعد وطن عزیز میں امن و سکون قائم ہوا ہے جس کو تباہ کرنے کیلئے شرپسند عناصر پھر سے سرگرم ہو گئے ہیں، ہم پاک افواج سمیت تمام سکیورٹی اداروں کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جو اپنی جانوں کے نذرانے پیش کر کے ہمارے لئے امن لانے کیلئے کوشاں ہیں۔ قوم سکیورٹی اداروں کیساتھ کھڑی ہے، دہشت گرد انسانیت اور امن کے دشمن ہیں‘ پاکستان دشمن قوتیں یہاں پر امن، ترقی اور خوشحالی نہیں چاہتیں لیکن ہمارے جوان کے سامنے سینہ تانے کھڑے ہیں اور ہر طرح کی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سجادہ نشین دائم الحضوری قصوری پیر سید علی حیدر شاہ بخاری نے کہا کہ ہم سیدہ ¿ کائنات کی شان و عظمت میں کسی طرح کی گستاخی برداشت نہیں کرینگے‘ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے بار بار سیدہ ¿ کائنات سلام اللہ علیہا سے اپنی محبت کا اظہار کیا، یہ کسی باپ کا اپنی بیٹی سے روایتی اظہارِ محبت نہیں تھا بلکہ غیرمعمولی نوعیت کی اْنسیت اور شفقت و پیار تھا‘ آپ کو تمام جنتی عورتوں کی سردار قرار دیا گیا اور آج ایک مولوی اْٹھ کر آپ کی شانِ اقدس میں گستاخی کا مرتکب ہو رہا ہے جو ہمیں کسی صورت برداشت نہیں۔ پیر سید عمران شاہ ولی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہم خلیفہ اوّل جنابِ صدیق اکبر رضی اللہ عنہ اور دیگر صحابہ کرام کی عزت و ناموس پر بھی ہم کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرینگے، ہم حکومت سے اپیل کرتے ہیں وہ ایسے شرپسند اور مذہبی منافرت پھیلانے والے عناصر کیساتھ سختی کیساتھ پیش آئے اور انہیں کیفرکردار تک پہنچائے کیونکہ آج اگر حکومت نے خود ان کیخلاف اقدامات نہ اٹھائے تو خدانخواستہ کہیں ملک میں مذہبی منافرت پھیلنے سے مسلکی بنیادوں پر لڑائی جھگڑے نہ شروع ہو جائیں۔ حکمران یاد رکھیں کہ ملکی ترقی کے دشمن یہی چاہتے ہیں کہ پاکستان کا حال بھی ملک شام کی طرح ہو جائے اور مسلمان آپس میں ہی لڑتے رہیں۔ اس موقع پر کثیر تعداد میں مشائخ عظام نے کانفرنس میں شرکت کی جن میں پیر سید اصغر علی گیلانی المعروف چن پیر سرکار‘ پیر سید عرفان شاہ مشہدی‘ صاحبزادہ دیوان احمد مسعود چشتی‘ پیر سید محفوظ احمد شاہ مشہدی‘ مولانا سعید احمد اسد‘ پیر سید منور حسین شاہ بخاری‘ سید مزمل حسین جماعتی‘ صاحبزادہ پیر سید علی حیدر حسین شاہ جماعتی‘ پیر سید زین العابدین‘ پیر محمدحبیب عرفانی‘ پیر ضیاء محی الدین گیلانی‘ خواجہ غلام قطب الدین فریدی‘ قاری افضال انجم‘ صاحبزادہ غلام رسول عرفانی و دیگر شامل تھے‘ سٹیج سیکرٹری کے فرائض معروف اینکر پرسن تسلیم احمد صابری نے انجام دئیے۔ کانفرنس کے منتظمین کی جانب سے کورونا وائرس کے پیش نظر حکومتی ایس او پیز پر مکمل عملدرآمد کیا گیا، سینی ٹائر گیٹ نصب کئے گئے، ہاتھ دھونے کیلئے خصوصی انتظامات تھے جبکہ اس موقع پر سماجی فاصلے کو بھی برقرار رکھا گیا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -