نئی نسل علامہ اقبالؒ کے پیغام پر عمل کرے،ولید اقبال

نئی نسل علامہ اقبالؒ کے پیغام پر عمل کرے،ولید اقبال

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)نئی نسل علامہ محمد اقبالؒ کی نظم ”لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری“ میں دیے گئے خوبصورت پیغام پر عمل کرے۔ طلبہ تعلیم پر توجہ دیں اور بڑے ہو کر ملکی تعمیر وترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کرنے کا عزم کریں ان خیالات کا اظہارسینیٹر ولید اقبال نے نظریہئ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام جاری اپنی نوعیت کے منفرد پروگرام نظریاتی سمر سکول کے 20 ویں سالانہ تعلیمی سیشن (آن لائن)کے 24ویں روز اپنے خطاب کے دوران کیا۔ اس سکول کا ماٹو ”پاکستان سے پیار کرو“ ہے۔ سینیٹر ولید اقبال نے کہاکہ علامہ اقبالؒ نے بچوں کیلئے بہت نظمیں لکھی ہیں۔

انہوں نے جب معروف نظم بچے کی دعا ”لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری“ لکھی تو اس کے پیچھے ان کی ایک سوچ کارفرما تھی۔ وہ بچوں کی تعلیم وتربیت پر بطور خاص توجہ دینے پر زور دیتے تھے۔ علامہ اقبالؒ ماہر تعلیم نہیں تھے لیکن تعلیم ان کی توجہ کا بڑا مرکز رہی ہے۔ علامہ اقبالؒ کا پہلا پیشہ معلمی ہی تھا،اور آنیوالے برسوں میں وہ کئی یونیورسٹیوں کی نصابی کمیٹیوں میں بھی شامل رہے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ علامہ محمد اقبالؒ کی بچوں کے حق میں دعا قبول فرمائے کہ ہر بچہ اپنے وطن کی زینت بنے جس طرح پھول سے چمن کی زینت ہوتی ہے اور ایسا پروانہ بنے جسے علم کی شمع سے محبت ہو۔آپ ایسی شمع بنیں جس کے دم سے دنیا کااندھیرا دور ہو جائے۔ علامہ محمد اقبالؒ نے بچے کی دعا”لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری“ کے ذریعے بچوں کو جونہایت خوبصورت پیغام دیا ہے۔آپ غریبوں کی حمایت اور ضعیفوں کی مدد کریں۔برائی سے بچیں اور نیکی کا راستہ اختیار کریں۔ انہوں نے کہا کہ حفاطتی تدابیر اختیار کرتے ہوئے 15ستمبر سے تعلیمی اداروں کو کھولنے کا اعلان کیا گیا ہے جو خوش آئند ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -