سول سروس کی کارکردگی میں بہتری کیلئے اہم حکومتی اقدام، 20سال سروس کی تکمیل پر ریٹائرمنٹ کیلئے سول سرونٹس رولز 2020کا نفاذ

سول سروس کی کارکردگی میں بہتری کیلئے اہم حکومتی اقدام، 20سال سروس کی تکمیل پر ...

  

اسلام آباد (آئی این پی)سول سروس کی استعداد اور کارکردگی میں بہتری کے لیے حکومت کا اقدام،بیس سال سروس کی تکمیل پر ریٹائرمنٹ کیلئے سول سرونٹس رولز 2020 کا نفاذ،سول سروس کی استعداد اور کارکردگی کو بہتر بنانے کے لئے،15-04-2020 کو وزیراعظم کی منظوری کے بعد سول سرونٹس (سروس سے ڈائریکٹری ریٹائرمنٹ)رولز 2020 وضع کیے گئے۔ ریٹائرمنٹ رولز 2020 کے تحت سروس کے 20 سال مکمل ہونے پر 1-22 گریڈ کے ہر ملازم، افسر / عہدیدار کی لازمی جانچ کی جا ئے گی۔ ان قواعد کے تحت تشکیل دی جانے والے ریٹائرمنٹ بورڈز اور ریٹائرمنٹ کمیٹیوں کے ذریعے افسران کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔گریڈ 20-22 کے افسران کی کارکردگی کے جائزے کے لئے بورڈ کی سربراہی چیئرمین ایف پی ایس سی کرتے ہیں جبکہ سکریٹری اسٹیبلشمنٹ، سیکرٹری کابینہ، سیکرٹری خزانہ اور سکریٹری قانون اس کے مستقل ممبر ہیں۔ ہر وزارت کے گریڈ 17۔19 کے افسران کی جانچ کیلئے کمیٹی کا سربراہ متعلقہ ایڈیشنل سیکرٹری ہے جبکہ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن، فنانس ڈویژن اور لا ڈویژن کے جوائنٹ سکریٹری اور متعلقہ محکمہ کے سربراہ اس کمیٹی کے ممبر ہیں۔ ہر وزارت کے گریڈ 16 اور اس سے نیچے کے عہدیداروں کی جانچ پڑتال کے لئے کمیٹی کی سربراہی سینئر جوائنٹ سکریٹری یا جوائنٹ سکریٹری کرتے ہیں جبکہ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن، فنانس ڈویژن اور لا ڈویژن کے نمائندے، جو گریڈ 19 سے کم نہیں ہیں اور متعلقہ محکمہ کے سربراہ، کمیٹی کے ممبران میں شامل ہیں۔ریٹائرمنٹ کی وجوہات میں غیر معیاری پرفارمنس ایویویلیشن رپورٹس(پی ای آر) یا تین مختلف افسران کی طرف سے تین یا زیادہ پی ای آر میں منفی تبصرے، پروموشن بورڈ کی جانب سے دو مرتبہ ترقی کا مسترد کیا جانا، بدعنوانی کا مرتکب ہونا یا نیب کے ساتھ پلی بارگین کرنا یا رضاکارانہ واپسی یا پروموشن بورڈ کی جانب سے ایک سے زیادہ موقعوں پر کیٹیگری سی میں رکھا جانا شامل ہیں۔ 20 سال سروس کی تکمیل پر ریٹائرمنٹ کیلئے ڈائریکٹری ریٹائرمنٹ کے طریقہ کار کو بھی واضح کیا گیا ہے۔ کیسز ریٹائرمنٹ بورڈز اور کمیٹیوں کے پاس بھیجے جائیں گے جس کے بعد ان کے فیصلے پر عمل کیا جائے گا۔ سرکاری ملازمین کو ریٹائرمنٹ کے لئے شوکاز نوٹس جاری کیا جائے گا اور انہیں سول سرونٹ اپیل رولز 1977 کے تحت ذاتی سماعت کا موقع فراہم کیا جائے گا۔ طے شدہ طریقہ کار کو مکمل کرنے کے بعد، اگر مجاز اتھارٹی مطمئن ہے کہ عہدیدار کی مزید سروس عوامی مفاد میں نہیں ہے تو، افسر / اہلکار پنشن اور ریٹائرمنٹ کے دیگر مراعات کے ساتھ ریٹائر ہوجائیں گے۔فی الحال، فیڈرل گورنمنٹ میں 27000 افسران خدمات انجام دے رہے ہیں جبکہ گریڈ 16 اور اس سے نیچے کے عہدیدار کی تعداد تقریبا 550000 ہیں۔ وفاقی حکومت کی استعداد اور کارکردگی کو بڑھانے کے عمل کو نافذ کرنے کے لئے، بورڈ کی پہلی میٹنگ جولائی 2020 کے آخر تک ہو گی جس میں گریڈ 20تا 22 کے 565 افسران کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔ یہ افسران پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس، پولیس سروس آف پاکستان اور سیکریٹریٹ گروپ کے ہیں۔ گریڈ 17-19 اور گریڈ 16 اور اس سے نیچے کے افسران کی جانچ کے لئے کمیٹیوں کے اجلاس اگست 2020 سے شروع ہوں گے۔

ریٹائر منٹ رولز

مزید :

صفحہ اول -