57کنال اراضی، 100کمرے، لاہور چمبہ ہاؤس کو 30سالہ لیز پر دینے کا فیصلہ

  57کنال اراضی، 100کمرے، لاہور چمبہ ہاؤس کو 30سالہ لیز پر دینے کا فیصلہ

  

لاہور(ارشد محمود گھمن)وفاقی کیبنٹ ڈویژن نے لاہورکے چمبہ ہاؤس کو 30سالہ لیز پر دینے کا فیصلہ کرلیا،چمبہ ہاؤس 57کنال پر محیط ہے جس کی مالیت تقریباً16ارب روپے بنتی ہے،چمبہ ہاؤس اس وقت پاکستان ورکس ڈیپارٹمنٹ(پی ڈبلیو ڈی)کی ملکیت ہے جسے پی ڈبلیو ڈی نے ریسٹ ہاؤس ڈکلیئر کررکھاہے جس میں وفاقی اداروں کے افسران ٹھہرتے ہیں۔ذرائع کے مطابق چمبہ ہاؤس کو لیز پر دینے کے فیصلہ کے پیچھے لاہور کی ایک اہم سیاسی شخصیت کا ہاتھ ہے،چمبہ ہاؤس اس وقت 5بلاکس اور100کمروں پر مشتمل ہے۔یہاں ٹھہرنے والے افراد سے 2500روپے روزانہ کی بنیاد پر کرایہ لیا جارہاہے۔چمبہ ہاؤس کے کمروں کے کرایہ کی مد میں 9کروڑ روپے سالانہ آمدنی ہورہی ہے۔ذرائع کے مطابق چمبہ ہاؤس میں ہوٹلنگ کے کاروبار سے وابستہ افراد دلچسپی لے رہے ہیں،جن میں ایک اہم سیاسی شخصیت کا قریبی عزیز بھی شامل ہے۔ذرائع کے مطابق محکمہ پی ڈبلیو ڈی چمبہ ہاؤس کو لیز پر دینے کو منافع بخش نہیں سمجھ رہا اس کی بجائے اسے محکمہ خود ہوٹل یا گیسٹ ہاؤس کے طور پر چلائے تو سرکاری خزانہ کو زیادہ فائدہ پہنچ سکتاہے تاہم وفاقی کیبنٹ ڈویژن نے اسے لیز پر دینے کا فیصلہ کرلیاہے۔ماضی میں چمبہ ہاؤس کوارکان پنجاب اسمبلی کے ریسٹ ہاؤس کے طور پر استعمال کیا جاتاتھا،بعد میں اسے احتساب بیورو کو دے دیاگیا،اب اسے پی ڈبلیو ڈی ریسٹ ہاؤس کے طور پر استعمال کررہاہے۔

چمبہ ہاؤس

مزید :

صفحہ اول -