پروفیسر یونس سومرو طویل علات کے بعد انتقال کرگئے

  پروفیسر یونس سومرو طویل علات کے بعد انتقال کرگئے

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے سابق پروفیسر آف آرتھوپیڈک سرجن پروفیسر محمد یونس سومرو 73سال کی عمر میں طویل علالت کے بعد کراچی کے مقامی اسپتال میں انتقال کرگئے،وہ سابق وفاقی وزیر رہنے کے علاوہ سول اسپتال کراچی کے ری ہیبلی سٹیشن سینٹر کو بحال کرکے اسے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ بناکر مصنوعی ہاتھ پاؤں بنانے کے شعبہ کو فعال کیا،مرحوم نے سوگوارن میں بیوہ کے علاوہ ایک بیٹا اور بیٹی چھوڑی ہے، پروفیسر محمد یونس سومرو سابق وزیراعلیٰ سندھ حاجی اللہ بخش سومرو کے پوتے سابق وفاقی وزیر الٰہی بخش سومرو کے بھتیجے اور سابق گورنر سندھ محمد میاں سومرو کے کزن تھے، ان کی نماز جنازہ ڈیفنس سوسائٹی کی مبارک مسجد میں بدھ کی شام کو ادا کی گئی جس میں مختلف شعبہ ہائے زندگی کی نمایاں شخصیات کے علاوہ بڑی تعداد میں طبی حلقوں کی ممتاز شخصیات نے شرکت کی ان کی تدفین ڈیفنس سوسائٹی کے قبرستان میں عمل میں آئی، وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ،وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو،ڈاؤ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر محمد سعید قریشی، ڈاؤ میڈیکل کالج کے پرنسپل پروفیسر امجد سراج میمن، سابق ایڈیشنل سیکریٹری صحت ڈاکٹر صابر میمن، پی ایم اے کے ڈاکٹر اسماعیل میمن،پی ڈی ایف کے ڈاکٹر شاکر عالم پروفیسر ٹیپوسلطان، پروفیسر حسن دوست آفریدی، ڈاکٹر شفقت میمن عباسی نے پروفیسر یونس سومرو کی رحلت پر گہرے رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے ان کی مغفرت کی دعا اور لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیاہے اور کہا ہے کہ پروفیسر یونس سومرو کی طبی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -