حکومت ہر محاذ پر فلاپ،اپوزیشن کا گراف اوپرآرہا ہے، دوست کھوسہ

حکومت ہر محاذ پر فلاپ،اپوزیشن کا گراف اوپرآرہا ہے، دوست کھوسہ

  

ڈیرہ غازیخان (سٹی رپورٹر) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماء سابق وزیر اعلی پنجاب سردار دوست محمد خان کھوسہ نے کہاہے کہ مرکز اور پنجاب میں ان ہاؤس تبدیلی کو خارج از امکان قرار نہیں دیا جا سکتا عمران خان کو لانے والے بھی پریشان ہیں حکومت کسی بھی شعبہ میں کامیاب ہوتی نظر نہیں آتی وزیر اعظم ون مین شو ہیں اور غیر منتخب لوگوں کے ذریعے حکومت چلائی جارہی ہے تازہ ترین سروے رپورٹ کے مطابق حکومت کا گراف نیچے اور اپوزیشن کاگراف اوپر آرہا ہے،(بقیہ نمبر27صفحہ6پر)

تبدیلی سرکارکوشاید اب اس تبدیلی کا بھی سامنا کرنا پڑے کہ یہ حکومت اپنی مدت پوری نہ کرسکے وہ کھوسہ ہاؤس میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے اس موقع پر ان کے ہمراہ ڈویژنل نائب صدرڈیرہ غازی خان غلام سرور دلشاد، ضلعی صدر راجن پور سردار وقاص خان گورچانی، ضلعی جنرل سیکرٹری ڈی جی خان علی مراد خان کھتران، سابق بار صدر بہرام خان بزدار ایڈووکیٹ، آفتاب خان ٹھینگا نی ایڈووکیٹ،خلیل خان برمانی ایڈووکیٹ،حاجی اعجاز کھوسہ، تحصیل اور ضلع کے کارکنوں نے شرکت کی سردار دوست محمد خان کھوسہ نے کہاکہ یہ کہنا درست نہیں کہ اپوزیشن کے لوگ حکومت کے ساتھ رابطے میں ہیں بلکہ حکومتی ممبران اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ رابطے میں ہیں جنوبی پنجاب کے عوام مکمل اور بااختیار الگ صوبہ چاہتے ہیں انتظامی لحاظ سے بکھرا ہوا سکرٹریٹ ہے جس کا ایک افسر ملتان اور دوسرا بہاولپور میں بیٹھا ہوا ہمیں بالکل منظور نہیں یہ ہمارے ساتھ بھونڈا مذاق ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب سے پہلے انہوں نے حکومتی ببینچز پر بیٹھ کر الگ صوبے کی ڈیمانڈ کی تھی جس کاانہیں خمیازہ بھی بھگتنا پڑا وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار کا تمام فوکس تونسہ میں ترقیاتی کاموں اور ضلع بنانے پر ہے انہیں کوئی بتائے کہ وہ پنجاب کے چیف منسٹر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تونسہ کو ضلع بناؤ ساتھ میں جام پور کو بھی ہر صورت میں ضلع بنایا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈیرہ غازی خان سمیت راجنپور اور ڈویژن کے چاروں اضلاع میں لاء اینڈ آرڈر کی صورت حال خراب ہے ایک دن میں درجنوں بڑی وار داتیں رونما ہورہی ہیں۔بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور واپڈا کا صارفین کے ساتھ رویہ ناروا نہیں ظالمانہ ہے۔ ایک گھر میں بجلی چوری پر پورے علاقے کی بجلی بند کردی جاتی ہے یہ کہاں کا انصاف ہے۔ انہوں نے کہا کرپشن کی غضب کہانی مرتب کی جارہی کوئی پوچھنے والا نہیں، جلد ان کی پارٹی ڈیرہ غازی خان کے حوالے سے ایک وائٹ پیپر جاری کرے گی جس میں کرپشن اور کرپشن کرنے والے تمام کرداروں کا پردہ چاک کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی ممبران اور وزیروں کی کارکردگی مایوس کن ہے یہی وجہ ہے کہ ان کی وزیر زرتاج گل کے ساتھ ان کے اپنے حلقہ میں عوام نے آڑے ہاتھوں لیا اور سخت رویہ اختیار کیا۔ یہی حالت دیگر حکومتی نمائندوں کے ساتھ ہورہا ہے۔ وزیر اعلی اور مشیر صحت کے اپنے ضلع میں عوام کو صحت کی سہولیات فراہم نہیں اور کویڈ 19 کے سیریس مریضوں کو صرف کھانسی اور بخار کا سیرپ دیا جاتا ہے ڈیرہ غازی خان میں عام تاثر ہے کہ جو ہسپتال گیا وہ واپس تابوت میں آئے گا ان حالات میں عوام کا رویے تبدیل نہ ہوں تو اور کیا ہوگا۔

دوست کھوسہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -