راجن پور:بستی اللہ داد میں آپریشن، قادیانیت کے پرچار پر سکول سیل

      راجن پور:بستی اللہ داد میں آپریشن، قادیانیت کے پرچار پر سکول سیل

  

راجن پور (تحصیل رپورٹر ) سوشل سروسز گروپ کی قادیانیوں کے خلاف درخواست پر ڈی سی ذولفقار علی کھرل نے ایکشن لے لیا, یاد رہے راجن پورمیں بستی جاگیر گبول کے پاس بستی اللہ داد میں قادیانیت کا پرچار زور و شور سے جاری ہے.قادیانی اس علاقہ کو منی قادیان بنانے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں. بستی اللہ داد میں قادیانیوں کی این جی اوز ہیومنٹی فرسٹ ایک (بقیہ نمبر3صفحہ6پر)

سکول الموعود پبلک سکول غیر قانونی طریقہ سے چلا رہی تھی جس میں 70 سے زائد بچے مسلمانوں کے زیر تعلیم تھے جن کو راشن اور پیسوں کا لالچ دیکر ان کو قادیانیت کی تعلیم دی جا رہی تھی اور بہت سی غیر قانونی و غیر آئینی کام اس سکول میں ہو رہے تھے سوشل سروسز گروپ نے مکمل ثبوت اکٹھے کرنے کے بعد اس پر قانونی کاروائی کے لئے ڈپٹی کمشنر کو درخواست گزاری جس پر فوری ایکشن لیتے ھوے جناب ذوالفقار علی ڈپٹی کمشنر راجن پور,نے ڈی پی او ضلع راجن پور اور ایس ایچ او تھانہ سٹی راجن پور پولیس کی بھاری نفری کے ساتھ مرزائیوں اس سکول کو مکمل طور ہر سیل کردیا ہے اور مزید قانونی کاروائی کی بھی یقین دہانی کروائی ہے علماء کرام اہلیان راجنپور،رضاکاران ختم نبوت پاکستان اور ایڈووکیٹ سپریم کورٹ جناب غلام مصطفیٰ چوہدری صدرختم نبوت لائرز فورم،مرکزی میلاد کمیٹی کے صدر صاحبزادہ جہانگیر فرید ایڈوکیٹ،مرکزی نعت کمیٹی کے سرپرست سردار زاھد محمود مزاری اور صدر سید مشتاق احمد رضوی قادری اور سید ارشد گیلانی، زاھد انجم بھٹی ممبر ڈویڑنل امن کمیٹی علامہ قاری نورالحسن الرحیمی نے سوشل سروسز کے صدر ندیم احمد چوھدری اور جملی ممبران کی اس کاوش کو سراہا اور کہا کے ختم نبوت ہمارے ایمان کا حصہ ہے اس پر کسی بھی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا. قادیانیت کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا وقت آن پہنچا ہے یہ بات ہمارے لیے ناقابل برداشت ہے کہ قادیانی سرعام اپنے مذہب کی تبلیغ کریں ہمارے مسلمان بھائیوں کو ورغلائیں اور ہم چپ چاپ بیٹھے رہیں. ان شاء اللہ قادیانیت کو ختم کرنے کے لیے جان بھی دینی پڑی تو اس سے بھی دریغ نہیں کریں گے۔

سکول سیل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -