اسلام آبادہائیکورٹ، مغوی کی عدم بازیابی پر سیکرٹری داخلہ ، آئی جی اسلام آباد کو 20 ،20 لاکھ روپے جرمانہ

اسلام آبادہائیکورٹ، مغوی کی عدم بازیابی پر سیکرٹری داخلہ ، آئی جی اسلام ...
اسلام آبادہائیکورٹ، مغوی کی عدم بازیابی پر سیکرٹری داخلہ ، آئی جی اسلام آباد کو 20 ،20 لاکھ روپے جرمانہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد کے شہری سلمان فاروقی کے مبینہ اغوا کے کیس میں رپورٹ جمع نہ کروانے پر اسلام آباد ہائی کورٹ نے آئی جی اسلام آباد پولیس، ایس پی انویسٹی گیشن، ایس ایچ او ، سیکرٹری وزارتِ داخلہ کو 20، 20 لاکھ روپے جرمانہ کرتے ہوئے آئی جی، ایس پی انویسٹی گیشن اور ایس ایچ او کیخلاف محکمانہ کارروائی کی ہدایت کردی۔

کیس کی سماعت کے دوران جسٹس محسن اختر کیانی کو بتایا گیا کہ اسلام آباد پولیس کی جانب سے سلمان فاروقی کے مبینہ اغوا کے کیس میں جواب جمع کرنے کےلئے مزید وقت کی استدعا دائر کی گئی ہے اور کہا گیا کہ جے آئی ٹی بنائی گئی ہے مگر ابھی رپورٹ تیار نہیں ہوئی۔

جسٹس محسن اختر کیانی نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جتنا وقت دینا تھا دے چکے، سیف سٹی پراجیکٹ کے ہوتے ہوئے بندے کو اٹھایا جاتا ہے آپ لوگوں کو کچھ نظر نہیں آتا۔

انہوں ے ریمارکس میں کہا کہ سیف سٹی پراجیکٹ سے لوگوں کی ذاتی تصاویر واٹس ایپ کرتے ہو، اس پر آپ لوگوں کی نظر یں ہوتی ہیں، شہری کے اغوا کی آپ کو سیف سٹی سے ویڈیو نہیں ملتی۔

عدالت نے رپورٹ جمع نہ کرنے پر آئی جی اسلام آباد پولیس، ایس پی انویسٹی گیشن، ایس ایچ او اور سیکرٹری وزارتِ داخلہ جرمانہ کر دیا اور کیس کی آئندہ سماعت پر مغوی کو پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

واضح رہے کہ شہری سلمان فاروقی کے والد نے بیٹے کی عدم بازیابی کیخلاف اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کررکھا ہے۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -