غلام سرور خان کے لئے نئی مشکل کھڑی ہو گئی،ملک کی سب سے بڑی اپوزیشن جماعت نے وزیر ہوابازی کیخلاف تحقیقات کا مطالبہ کر دیا

غلام سرور خان کے لئے نئی مشکل کھڑی ہو گئی،ملک کی سب سے بڑی اپوزیشن جماعت نے ...
 غلام سرور خان کے لئے نئی مشکل کھڑی ہو گئی،ملک کی سب سے بڑی اپوزیشن جماعت نے وزیر ہوابازی کیخلاف تحقیقات کا مطالبہ کر دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی میں مسلم لیگ (ن)نے وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور خان کیخلاف تحقیقات کا مطالبہ کر دیا۔مسلم لیگ(ن)کے رکن مرتضی جاوید عباسی نے کہا کہ ڈی جی سول ایوی ایشن نے 13 جولائی کو عمان سول ایوی ایشن کو لکھا کہ کسی پائلٹس کا لائسنس جعلی نہیں، میڈیا اور سوشل میڈیا کی وجہ سے کنفیوژن پیدا ہوئی، وفاقی وزیر کے بیان سے دنیا بھر میں پاکستانی پائلٹ کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا،ہمارے پائلٹس اور انجینئر جعلی نہیں انکو بدنام کرنے کی کوشش اس جعلی وزیر اور حکومت نے کی،اسکی تحقیقات کی جائیں اور ایوان میں رپورٹ پیش کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق  قومی اسمبلی کا اجلاس ڈپٹی سپیکر قاسم کان سوری کی زیر صدارت ہوا۔اجلاس میں نکتہ اعتراض پر بات کرتے ہوئے مسلم لیگ(ن)کے رکن مرتضی جاوید عباسی نے کہا کہ 8جولائی کو رواں سیشن شروع ہوا تھا،ہم نے پی آئی اے سے متعلق توجہ دلاؤ نوٹس جمع کروایا تھاجس پر جو بیان وفاقی وزیر ہوابازی نےاس ایوان میں دیا،اس کو سامنے رکھا جائے اور 13 جولائی کو ڈی جی سول ایوی ایشن نے عمان کی ایوی ایشن کو خط لکھا،اس خط نے وفاقی وزیر کے ایوان میں دئیے گئے بیان کی نفی کر دی ہے جو حیران کن بات ہے،وفاقی وزیر کے بیان سے پی آئی اے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کی دنیا بھر میں جگ ہنسائی ہوئی،وفاقی وزیر کے بیان کو انہی کی وزارت کے ایک آفسر نے رد کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈی جی سول ایوی ایشن ذمہ دار شخص ہے،ڈی جی سول ایوی ایشن نے خط میں لکھا کہ میڈیا اور سوشل میڈیا کی وجہ سے کنفیوژن پیدا ہوئی،یہ کنفیوژن وفاقی وزیر کے بیان سے پیدا ہوئی،پائلٹس جعلی نہیں تھے بلکہ وزیر ہوابازی کا اس ایوان میں دیا گیا بیان جعلی تھا،وفاقی وزیر نے ایوان میں غلط بیانی کی،ڈی جی سول ایوی ایشن نے 13 جولائی کو کویت سول ایوی ایشن کو لکھا کہ کسی پائلٹس کا لائسنس جعلی نہیں،وفاقی وزیر کے بیان سے دنیا بھر میں پاکستانی پائلٹ کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا،میں ڈی جی سول ایوی ایشن کا خط اس ایوان کے ریکارڈ کا حصہ بنانا چاہتا ہوں،اس ایوان کی کمیٹی بنائی جائے جو وزیر ہوا بازی کے بیان کی تحقیقات کرے۔

مرتضیٰ جاوید عباسی کاکہناتھاکہ وفاقی وزیرغلام سرورخان  کےبیان سےاس ایوان کا استحقاق مجروح ہوا،یہ معمولی بات نہیں ہے، اسکی تحقیقات کی جائیں اور ایوان میں رپورٹ پیش کی جائے،ہمارے پائلٹس اور انجینئر جعلی نہیں انکو بدنام کرنے کی کوشش اس جعلی وزیر اور حکومت نے کی ہے جسکی ہم مذمت کرتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -