ملاقات کیلئے جانے والے بھارتی سفارتکاروں نے کلبھوشن سے بات ہی نہیں کی، جاسوس اپنے سفیروں کو پکارتا رہا، وہ چلتے بنے، حیران کن انکشاف

ملاقات کیلئے جانے والے بھارتی سفارتکاروں نے کلبھوشن سے بات ہی نہیں کی، جاسوس ...
ملاقات کیلئے جانے والے بھارتی سفارتکاروں نے کلبھوشن سے بات ہی نہیں کی، جاسوس اپنے سفیروں کو پکارتا رہا، وہ چلتے بنے، حیران کن انکشاف

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارتی سفارتکار جاسوس کلبھوشن یادیو سے ملاقات کیلئے آئے لیکن اس سے بات کیے بغیر ہی چلے گئے، کلبھوشن انہیں پکارتا رہا لیکن وہ ایسے ہی واپس چلے گئے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ بھارت کو جاسوس کلبھوشن یادیو تک قونصلر رسائی دی گئی تھی ۔ اس رسائی کے تحت بھارت  کے 2 سفارتکار ملاقات کیلئے آئے لیکن کلبھوشن سے بات کیے بنا ہی چلتے بنے۔ کلبھوشن باربارسفارتکاروں کو پکارتا رہا لیکن انہوں نے ایک نہ سنی۔

شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ جو بات طے ہوئی تھی اس کے مطابق قونصلر رسائی دی گئی لیکن یہ قونصلر رسائی چاہتے ہی نہیں تھے، انہیں درمیان میں شیشے پر اعتراض تھا، ہم نے وہ بھی ہٹادیا ، انہوں نے آڈیو ویڈیو ریکاردنگ پر اعتراض کیا تو وہ بھی ختم کردی لیکن سفارتکاروں نے کلبھوشن سے بات ہی نہیں کی۔ کلبھوشن کہتا رہا مجھ سے بات کریں اور سفارتکارچلتے بنے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارتی سفارتکاروں کارویہ حیران کن تھا۔ سفارتکاروں نے کلبھوشن سے بات ہی نہیں کرنی تھی تو رسائی کیوں مانگی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -