سی اینڈ ڈبلیو پنجاب کی انتظامیہ محکمے سے کرپشن کو ختم کرنے میں بری طرح ناکام

سی اینڈ ڈبلیو پنجاب کی انتظامیہ محکمے سے کرپشن کو ختم کرنے میں بری طرح ناکام

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(شہبازاکمل جندران//انوسٹی گیشن سیل)سی اینڈڈبلیو پنجاب کی انتظامیہ ،محکمے سے کرپشن کو کم کرنے میں بری طرح ناکام ہوگئی۔جھنگ ،شورکوٹ ، کبیروالا ،مالووانہ ٹول پلازے کے سکینڈل نے سب کو ورطہ ء حیرت میں ڈال دیا۔ایکسئین جھنگ نے ٹول پلازے کا ٹینڈر کیا نہ ہی ریزرو پرائس مقرر کی اور گزشتہ دوبرسوں سے ٹول پلازے سے حاصل ہونیوالی آمدن کا بڑا حصہ بھی قومی خزانے میں جمع نہ کروایا۔ایکسئین جھنگ شیخ اعجاز کا کہنا ہے کہ وہ ہر روز معقول رقم خزانے میں جمع کروارہے ہیں۔ ان سے پہلے ایکسئین کے دور میں کم رقم جمع کروائی جاتی تھی۔معلوم ہواہے کہ سی اینڈڈبلیو میں کرپشن کا سلسلہ جاری ہے اور محکمے کی انتظامیہ کو کرپشن میں کمی لانے میں سخت دشواری کا سامنا ہے۔بتایا گیا ہے کہ پل کی تعمیر کو وجہ بناتے ہوئے گزشتہ دوبرسوں سے جھنگ ، شورکوٹ ،کبیر والا روڈ ،مالوانہ ٹول پلازے کی نیلامی نہیں کی گئی۔نہ تو محکمے کی طرف سے ٹول پلازے سے روزانہ گزرنے والی گاڑیوں کی تعداد گننے کے لیے باقاعدہ ٹریفک سروے کروایا گیا ہے۔اور نہ ہی نیلامی کے لیے ریزور پرائس مقرر کی گئی ہے حالانکہ قانونی طورپر کسی بھی ٹول پلازے کی ریزرو پرائس مقرر کیا جانا لازمی ہوتا ہے۔ذرائع کے مطابق مذکورہ ٹول پلازے پر ریزرو پرائس کے بغیر ہی گزشتہ دوبرسوں سے محکمانہ طورپر ٹول ٹیکس کی وصولی کی جارہی ہے جس کا بڑا حصہ مبینہ طورپر خورد برد کرلیا جاتا ہے۔علم میں لایا گیا ہے کہ سابق ایکسئین جھنگ سہیل اکرم (ایکسئین ھائی ویز بہاولپور) کے دور میں ٹول ٹیکس کی مد میں روزانہ چند ہزار روپے قومی خزانے میں جمع کرواتے تھے۔جبکہ موجودہ ایکسئین جھنگ شیخ اعجاز احمد کی روزانہ کی اوسط لگ بھگ 90ہزار بتائی جاتی ہے۔ذرائع کے مطابق 2012-13میں مذکورہ ٹول پلازے کے ہمراہ جھنگ ، شورکوٹ ،کبیر والا ،بلاول پور ٹال پلازے کی ریزروپرائس 15کروڑ 99لاکھ روپے اور 2013-14کے لیے یہ رقم 25کروڑ 22لاکھ مقرر کی گئی تھی۔لیکن 2013-14سے ہی دونوں ٹول پلازے ٹھیکے پر دینے کی بجائے ان سے محکمانہ ریکوری کی گئی پھر 2014-15کے لیے جھنگ ، شورکوٹ ،کبیر والا ،بلاول پور ٹول پلازے کی ریزروپرائس6کروڑ 12لاکھ روپے مقرر کی گئی۔یوں جھنگ ، شورکوٹ ،کبیر والا روڈ ،مالوانہ ٹال پلازے کی ریزرو پرائس لگ بھگ18کروڑ روپے بنتی تھی۔ لیکن محکمے نے ریزرو پرائس مقر رنہ کرتے ہوئے ریکوری سٹاف کو کھلی چھٹی دیدی تاکہ وہ اپنی مرضی سے روزانہ کی ریکوری بیان کرسکیں۔ذرائع سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ جھنگ کے علاقے کے یہ ٹول پلازے سی اینڈڈبلیو کے انجنئیروں کے لیے کشش کا باعث رہے ہیں اور موجودہ سپرنٹنڈنٹ انجنئیر ھائی ویز ملتان خاور تحسین بھٹہ جب ایکسئین ھائی ویز جھنگ تعینات تھے ۔ تو ان کے دور میں بھی اس ٹول پلازے کو نیلام کرنے کی بجائے سیلف کولیکشن کی گئی تھی اور ان پر بھی ریکوری کی رقم کی خوردبرد کا الزام سامنے آیا تھا۔اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سپرنٹنڈنٹ انجنئیر ھائی ویز ملتان خاور تحسین بھٹہ کا کہناتھا کہ یہ بات درست ہے کہ وہ ایکسئین ھائی ویز جھنگ تعینات رہے ہیں۔ لیکن ان کے خلاف ٹول ٹیکس میں کرپشن کے حوالے سے انکوائری زیر التوا نہیں رہی۔جبکہ سابق ایکسئین جھنگ اور موجودہ ایکسئین ھائی ویز بہاولپور سہیل اکرم سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے موقف دینے سے اجتناب برتا ۔البتہ موجودہ ایکسئین ہائی ویز جھنگ شیخ اعجاز احمد کا کہناتھا کہ پل زیر تعمیر ہے جس کی وجہ سے ٹال پلازے کی نیلامی نہیں کی جارہی ۔ ان کا کہناتھا کہ ان سے پہلے ایکسئین کے دور میں ٹول ٹیکس کی رقم کم جمع کروائی جاتی تھی لیکن وہ روزانہ 90ہزارروپے سے زائد ٹیکس قومی خزانے میں جمع کروارہے ہیں اور وہ کسی قسم کی بے ضابطگی یا کرپشن میں ملوث نہیں ہیں۔سپرنٹنڈنٹ انجنئیر ھائی ویز فیصل آباد محمدنواز غازی کا کہنا تھا کہ وہ ایکسئنز کی کرپشن کے متعلق کچھ نہیں جانتے ۔البتہ یہ بات درست ہے کہ گزشتہ دو برسوں سے ٹول پلازے کی نہ تو ریزرو پرائس مقرر کی گئی ہے نہ ہی نیلامی ہوسکی اور پل بھی تاحال زیر تعمیر ہے۔

مزید :

علاقائی -