موضع ٹھٹھر میں پٹواری اور ریونیو آفیسر کے درمیان لین دین پرتنازع سینکڑوں شہری خوار

موضع ٹھٹھر میں پٹواری اور ریونیو آفیسر کے درمیان لین دین پرتنازع سینکڑوں ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (اپنے نمائندے سے)بورڈ آف ریونیو کے شعبہ سیٹلمنٹ کے موضع ٹھٹھر میں تعینات پٹواری اور ریونیو آفیسر کے درمیان باہمی اعتماد کی کمی کے باعث لین دین پر تنازع ،سینکڑوں شہر ی خوار ہو گئے ،فرد بدرات ملکیت ،انتقال وراثت اور نشاندہی کے عوض رشوت لاکھوں میں پہنچ گئی ،،سیٹلمنٹ کا کام مکمل کرنے کی آڑ میں بھی افسران بالا کی پھٹیکیں مشہور کر دی گئیں ،ریونیو آفیسر ز کی جانب سے تین تین ماہ تک نامکمل دورہ پروگرام نے شعبہ سیٹلمنٹ کی کارکردگی پر بھی سوالیہ نشان لگا دیئے ہیں ،شہریوں کی کثیر تعداد شعبہ سیٹلمنٹ کے عملہ کے خلاف سراپا احتجاج بن گئی ،کمشنر لاہور ،ڈسٹرکٹ سیٹلمنٹ آفیسر لاہور اور ڈی سی او لاہور سے نوٹس لینے کی اپیل کی گئی ہے ،روزنامہ پاکستان کی جانب سے کئے جانے والے سروے کے دوران معلوم ہوا ہے کہ بورڈ آف ریونیو کے شعبہ سیٹلمنٹ میں مانیٹرنگ کا سسٹم فعال نہ ہونے کے باعث سیٹلمنٹ کے سٹاف نے کرپشن کی انتہاکردی ،موقع گرداوری ،فرد بدرات ملکیت کے اجراء انتقالات کی تصدیق سے لیکر موقع نشاندہی اور قبضہ رپورٹس تک رشوت کے ریٹس مقرر کردیئے گئے جس کی مثا ل موضع ٹھٹھر کے پٹواری ذوالفقار اور ریونیو آفیسر رانا شاہد کو دیکھ کر بخوبی لگائی جاسکتی ہے ،مذکورہ پٹواری اور ریونیو آفیسر کی رشوت ،لین دین میں تنازعے ہونے کے باعث تمام بوجھ شہریوں پر ڈال دیا گیا ہے شہری عمر خالد نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ڈسٹرکٹ سیٹلمنٹ آفیسر لاہور رانا خالد محمود اور ای ایس او کینٹ آفتاب احمد خان سے نشاندہی کیلئے درخواست مارک کروا کر دو ماہ قبل پٹواری حلقہ ٹھٹھر ذوالفقار کودی تھی مذکورہ پٹواری اور ریونیو آفیسر رانا شاہد50ہزار روپے رشوت کا مطالبہ کررہے ہیں اور میری نشاندہی کی رپورٹ دبائے ہوئے ہیں ،شہری محمد رمضان ،محمد عاقل نے الزام عائد کیا کہ مذکورہ آفیسر رانا شاہد تین تین ماہ تک دورہ پروگرام ہی نہیں کرتا جب تک مذکورہ ریونیو آفیسر کو ڈیمانڈ کے مطابق رشوت نہ ملے اور پٹواری حلقہ بھی سارا سارا دن پراپرٹی ڈیلروں کے دفاتر بیٹھ کر جائیدادوں کی خریدو فروخت کرتا رہتا ہے جبکہ مذکورہ پٹواری کا منشی شہریوں سے منہ مانگی رشوت وصولی کر رہا ہے شہری محمد سلطان نوید احمد ،قاسم حبیب ،وحید شاہ،نے الزام عائد کیا کہ پٹوارسرکل موضع ٹھٹھر کبھی ڈیفنس کے پراپرٹی ڈیلر آفس میں منتقل کر دیا جاتا ہے کبھی ڈیفنس غازی چوک میں دوکان پر شفٹ کر دیا جاتا ہے تو کبھی بیدیاں روڈ پر شہریوں کو چکر لگوائے جاتے ہیں ،جبکہ زیادہ تر ریونیو ریکارڈ پٹواری حلقہ کے منشیوں کی گاڑیوں میں شفٹ ہوتا ہے جن کو ریکارڈ تک رسائی حاصل کرنے کیلئے قبل ازوقت رشوت لینا لازم ہو چکاہے علاقہ کے مقامی شہریوں نے مزید الزام کیا کہ پٹواری حلقہ نے مشہور کر رکھا ہے کہ سیٹلمنٹ کے کام مکمل کرنے کیلئے اعلیٰ افسران کی پھٹکیں بھری جارہی ہیں اس لئے پٹوار خانہ ایک جگہ پر نہیں رکھ سکتے اور نہ ہی مزید رشوت کے بغیر کوئی کام کیا جاسکتا ہے شہریوں کی کثیر تعداد نے شعبہ سیٹلمنٹ کے پٹوارسرکل ٹھٹھر کے پٹواری ذوالفقار اور ریونیو آفیسر رانا شاہد کی کرپشن روکنے کیلئے کمشنر لاہور عبداللہ سنبل، ڈی سی او کیپٹن (ر )محمد عثمان اور ڈسٹرکٹ سیٹلمنٹ آفیسر لاہور رانا خالد سمیت ڈائریکٹر اینٹی کرپشن لاہور طارق محمود سے بھی فوری نوٹس لینے کی اپیل کی ہے ۔