علامہ اقبال انٹر نیشنل ائرپورٹ پرکسٹم مافیاکا راج، اہلکار کروڑ پتی بن گئے

علامہ اقبال انٹر نیشنل ائرپورٹ پرکسٹم مافیاکا راج، اہلکار کروڑ پتی بن گئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(ارشد محمود گھمن)علامہ اقبال انٹر نیشنل ائرپورٹ لاہور کسٹم مافیاکا راج،کسٹم اہلکار کروڑ پتی بن گئے۔اعلیٰ افسران نے چپ سادھ لی۔دوران چیکنگ قیمتی اشیاء پر فیون،کاسمیٹکس،دیگر مصنوعات پر اعتراضات لگا کر اپنی تحویل میں لینے کا معمول بن گیا۔ باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ گذشتہ کئی سالوں سے علامہ اقبال انٹر نیشنل ائر پورٹ لاہور پر بیرون ملک سے آنے اور جانے والے مسافرین کو ’’ڈیپارچر او رارائیول‘‘کے وقت ان کے قیمتی سامان جن میں کھانے پینے کی اشیاء،تحائف،پرفیون ،کاسمیٹیکس،موبائل اسسریز،لیپ ٹاپ کی جامع تلاشی لیتے وقت مختلف قسم کے الزامات لگا کر قیمتی سامان میں سے اعلیٰ افسران کے نام پر پہلے اپنی تحویل میں لے لیتے ہیں۔ بعد ازاں مک مکا کر کے کلئیر کر دیا جاتا ہے۔ ذرائع نے مزید انکشاف کیا ہے کہ ائر پورٹ کے اندر تعینات کسٹم اہلکار نہایت قلیل عرصہ میں کروڑ پتی بن گئے ہیں جبکہ اعلی ٰ افسران مسافروں کی شکایت پر متعلقہ اہلکاروں کے عیب چھپانے کیلئے آئے دن فرضی کاروائیاں ڈال کران کے خلاف ایکشن لیتے رہتے ہیں۔ جس پر عملدرآمد ہرگز نہ کیا جاتا ہے۔اور اسی وجہ سے روزانہ ہزاروں مسافر ان کے ہاتھوں میں کٹھ پتلی کا شکار ہو جاتے ہیں۔جب اس متعلق موقف دریافت کرنے کیلئے ترجمان ائر پورٹ شاہد بھٹی سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا ہے کہ ایئر پورٹ کے اندر سی سی ٹی وی فوٹیج کیمرے لگے ہوتے ہیں۔غیر قانونی طور پر کسی کو چیک نہیں کیا جاتا۔اور کسٹم اہلکار معمول کے مطابق اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں۔
کسٹم مافیا

مزید :

صفحہ آخر -