پنجاب حکومت رواں مالی سال میں بھی ٹیکس وصولی کا ہدف حاصل کرنے میں مکمل ناکام رہی

پنجاب حکومت رواں مالی سال میں بھی ٹیکس وصولی کا ہدف حاصل کرنے میں مکمل ناکام ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور(صبغت اللہ چودھری) پنجاب حکومت رواں مالی سال میں بھی حسب روایت صوبائی ٹیکس وصولی کا ہدف حاصل کرنے میں مکمل ناکام رہی ہے ۔ ہدف کے مقابلہ میں 30.60 فیصد ، 50 ارب 43 کروڑ 5 لاکھ 53 ہزار روپے کم وصول ہوئے ہیں ۔ رواں مالی سال کے بجٹ میں صوبائی ٹیکس وصولی کا ہدف 164 ارب 68 کروڑ 2 لاکھ 44 ہزار روپے رکھا گیا تھا جبکہ 114 ارب 24 کروڑ 96 لاکھ 91 ہزار روپے وصول ہوئے ہیں ۔ ناکامی کے باوجود آئندہ مالی سال کے لئے وصولی کا ہدف 160 ارب 59 کروڑ 11 لاکھ 10 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے ۔ رواں مالی سال میں ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں ہدف کے مقابلہ میں 6.02 فیصد ، ایک ارب 79 کروڑ 99 لاکھ 60 ہزار روپے کم وصول ہوئے ہیں ۔ ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں وصولی کا ہدف 29 ارب 89 کروڑ 4 لاکھ 60 ہزار روپے رکھا گیا تھا جبکہ 28 ارب 9 کروڑ 5 لاکھ روپے وصول ہوئے ہیں ۔ ان ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں ہدف کے مقابلہ میں 38.01 فیصد ، 48 ارب 63 کروڑ 5 لاکھ 93 ہزار روپے کم وصول ہوئے ہیں ۔ ان ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں وصولی کا ہدف 134 ارب 78 کروڑ 97 لاکھ 84 ہزار روپے تھا جبکہ 86 ارب 15 کروڑ 91 لاکھ 91 ہزار روپے وصول ہوئے ہیں ۔ ڈائریکٹ ٹیکسسز میں ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی مد میں ہدف کے مقابلہ میں 7.89 فیصد، ایک ارب 79 کروڑ 99 لاکھ 60 ہزار روپے کی کم وصولی ہوئی ہے ۔ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی مد میں وصولی کا ہدف 22 ارب 79 کروڑ 99 لاکھ 60 ہزار روپے مقرر کیا گیا تھا جبکہ 21 ارب وصول ہو سکے ہیں ۔ ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں ٹرانسپورٹ اور انرجی کے تحت وصولی کا ہدف حاصل کیا گیا ہے ۔ ٹرانسپورٹ کی مد میں وصولی کا ہدف 55 کروڑ روپے اور انرجی کی مد میں وصولی کا ہدف چھ ارب 54 کروڑ 5 لاکھ روپے ہے ۔ ان ڈائریکٹ ٹیکسسز کے تحت بورڈ آف ریونیو کے لئے مقرر کردہ ہدف حاصل کیا گیا ہے جبکہ پنجاب ریونیو اتھارٹی کا ہدف حاصل نہیں ہوا ہے ۔ بورڈ آف ریونیو کا ہدف 39 ارب 78 کروڑ 97 لاکھ 84 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے ۔ پنجاب ریونیو اتھارٹی کے تحت سروسز پر سیلز ٹیکس کی مد میں ہدف کے مقابلہ میں 48.03 فیصد ، 45 ارب 63 کروڑ 5 لاکھ 93 ہزار روپے کم وصول ہوئے ہیں ۔ سروسز پر سیلز ٹیکس کی مد میں وصولی کا ہدف 95 ارب روپے مقرر کیا گیا ہے جبکہ صرف 46 ارب 36 کروڑ 94 لاکھ 7 ہزار روپے وصول ہو سکے ہیں ۔ بورڈ آف ریونیو کے تحت زرعی انکم ٹیکس کی وصولی کا ہدف دو ارب 1 کروڑ 89 لاکھ 38 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے جبکہ ایک ارب روپے وصول ہوئے ۔ رجسٹریشن کی مد میں وصولی کا ہدف ایک ارب 61 کروڑ 22 لاکھ 71 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے جبکہ 77 کروڑ 80 لاکھ روپے وصول ہو سکے ہیں ۔ لینڈ ریونیو کی مد میں ہدف 11 ارب 78 کروڑ 86 لاکھ 82 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے جبکہ ہدف سے زائد 12 ارب 28 کروڑ 95 لاکھ 27 ہزار روپے وصول ہوئے ہیں ۔ کیپیٹل ویلیو ٹیکس کی مد میں ہدف 5 ارب 43 کروڑ 26 لاکھ 31 ہزار روپے مقرر کیا گیا ہے جبکہ 4 ارب 64 کروڑ 90 لاکھ روپے وصول ہوئے ہیں ۔ اسٹام کی مد میں وصولی کا ہدف 18 ارب 93 کروڑ 72 لاکھ 62 ہزار روپے مقرر کیا گیا جبکہ ہدف سے زائد 21 ارب 7 کروڑ 32 لاکھ 57 ہزار روپے وصول ہوئے ۔ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے تحت اربن پراپرٹی ٹیکس کی مد میں وصولی کا ہدف 7 ارب 75 کروڑ روپے مقرر کیا گیا جبکہ 7 ارب 95 کروڑ روپے وصول ہوئے ۔ پروفیشنل پر ٹیکس کی مد میں وصولی کا ہدف 78 کروڑ 33 لاکھ 61 ہزار روپے مقرر کیا گیا جبکہ 72 کروڑ روپے وصول ہوئے ۔ افیون کے کاروبار پر وصولی کا ہدف 50 ہزار روپے تھا اس مد میں ایک روپیہ بھی وصول نہیں ہوا ۔ اثاثوں پر سی وی ٹی کی مد میں وصولی کا کوئی ہدف مقرر نہیں کیا گیا تھا جبکہ اس مد میں 24 کروڑ 12 ہزار روپے وصول ہوئے ۔ ایم وی ایکٹ کی مد میں وصولی کا ہدف 11 ارب 25 کروڑ 53 لاکھ 41 ہزار روپے مقرر کیا گیا جبکہ 9 ارب 73 کروڑ 35 لاکھ روپے وصول ہوئے ۔ دیگر ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں وصولی کا کوئی ہدف نہیں رکھا گیا جبکہ ایک کروڑ 12 لاکھ روپے وصول ہوئے ۔ صوبائی ایکسائز کی مد میں وصولی کا ہدف ایک ارب 78 کروڑ 26 لاکھ 8 ہزار روپے مقرر کیا گیا جبکہ ایک ارب 78 کروڑ 30 لاکھ روپے وصول ہوئے ۔ فارم ہاؤسز پر ٹیکس کی مد میں وصولی کا ہدف ایک کروڑ 50 لاکھ روپے مقرر کیا گیا جبکہ صرف دو لاکھ 88ہزار روپے وصول ہوئے ۔ بڑے گھروں پر ٹیکس کی مد میں وصولی کا ہدف 50 کروڑ روپے مقرر کیا گیا جبکہ صرف ایک کروڑ 40 لاکھ روپے وصول ہوئے دیگر ان ڈائریکٹ ٹیکسسز کی مد میں وصولی کا ہدف 71 کروڑ 36 لاکھ روپے مقرر کیا گیا جبکہ 54 کروڑ 80 لاکھ روپے وصول ہوئے ۔

مزید :

صفحہ اول -