جیل میں قیدی کو سکیننگ مشین سے گزارا گیا تو آواز دینے لگی، محافظوں نے تلاشی لی لیکن کچھ نہ ملا، بالآخر تنگ آکر ایکسرے کیا گیا تو جسم کے اندر چھپائی ایسی چیزیں نظر آگئیں کہ ڈاکٹر کے بھی ہوش اُڑگئے، آپ نے کبھی سوچا نہ ہوگا کہ یہ چیز بھی انسانی جسم میں ڈالی جاسکتی ہے

جیل میں قیدی کو سکیننگ مشین سے گزارا گیا تو آواز دینے لگی، محافظوں نے تلاشی ...
جیل میں قیدی کو سکیننگ مشین سے گزارا گیا تو آواز دینے لگی، محافظوں نے تلاشی لی لیکن کچھ نہ ملا، بالآخر تنگ آکر ایکسرے کیا گیا تو جسم کے اندر چھپائی ایسی چیزیں نظر آگئیں کہ ڈاکٹر کے بھی ہوش اُڑگئے، آپ نے کبھی سوچا نہ ہوگا کہ یہ چیز بھی انسانی جسم میں ڈالی جاسکتی ہے

  

برازیلیا(مانیٹرنگ ڈیسک)برازیل کی ایک جیل میں تین قیدی آئے۔ عملے نے انہیں سکیننگ مشین سے گزار تو وہ آواز دینے لگی لیکن تلاشی لینے پر ان سے کچھ برآمد نہ ہوا۔ اس پر عملے کو شک گزرا اور انہوں نے قیدیوں کا ایکسرے کروایا۔ ایکسرے کے نتائج میں ان کے جسم میں ایسی چیز کی موجودگی کا انکشاف ہوا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا کہ یہ چیز جسم میں بھی ڈالی جا سکتی ہے۔میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق بدنام زمانہ جیل ساﺅ پاﺅلو میں لائے گئے ان تینوں قیدیوں نے اپنے جسموں میں موبائل فون ڈال رکھے تھے۔

دنیا کی سب سے انوکھی پریم کہانی، 34 سالہ استانی کو12 سالہ طالبعلم سے تعلق قائم کرنے پر جیل بھیج دیا گیا، 7 سال سزا کاٹ کر باہر نکلی تو دونوں نے شادی رچالی لیکن پھر۔۔۔ انجام کیا ہوا؟ کوئی شخص تصور بھی نہیں کرسکتا

تینوں کے جسم سے مجموعی طور پر 19موبائل فون برآمد ہوئے جن کے ہیڈفونز بھی ہمراہ تھے جو فونز کے اوپر لپیٹے ہوئے تھے۔رپورٹ کے مطابق ایک شخص نے 5چھوٹے موبائل فون اپنے جسم میں داخل کر رکھے تھے جو ڈاکٹروں نے بغیر سرجری نکال لیے لیکن باقی دو نے بڑے موبائل فونز اپنے جسم میں چھپا رکھے تھے۔ انہیں نکالنے کے لیے ڈاکٹروں کو ان کے آپریشن کرنا پڑے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس