عوامی رکشہ یونین اور وکلاء برادری کا جمشید دستی کی رہائی کیلئے احتجاجی مظاہرہ

عوامی رکشہ یونین اور وکلاء برادری کا جمشید دستی کی رہائی کیلئے احتجاجی ...

لاہور( جنرل رپورٹر) عوامی رکشہ یونین اور وکلاء برادری کے نمائندوں نے فیصل ٹاؤن میں جمشید دستی کی رہائی کیلئے احتجاجی مظاہرہ کیا جس کی قیادت عوامی رکشہ یونین پاکستان کے چیئرمین مجید غوری نے کی۔مظاہرین جمشید دستی کی رہائی کیلئے نعرے بازی کرتے رہے ۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے عوامی رکشہ یونین پاکستان کے چیئرمین مجید غوری نے کہا ہے کہ اگر جمشید دستی کو72گھنٹوں میں جھوٹے مقدمات خارج کرکے رہا نہ کیا گیا تو پورے لاہور میں دما دم مست قلندر ہوگا۔انہوں نے کہا جمشید دستی جیسے لوگ وڈیروں، جاگیرداروں اور سرمایہ داروں کے خلاف سیسہ پلائی دیوار بن چکے ہیں کیونکہ ان لوگوں نے سفید پوشی کے باوجود کئی مرتبہ قومی اسمبلی کی سیٹ جیت کر ثابت کر دیا ہے کہ وہ ہی کسانوں ، مزدوروں اور سفید پوش طبقہ کی حقیقی اور توانا آواز ہیں۔ان کا قصور صرف اتنا ہے کہ ہر غریب اور مجبور کیلئے وہ بڑے سے بڑے ظالم اور جابرسے ٹکرانے کی جراء ت رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے غریب ہاریوں کے حصے کا پانی دلوانا جاگیر داروں کو ایک آنکھ نہ بھایا اور اس کو جھوٹے مقدمات میں ملوث کرا کے گرفتار کروانا قابل مذمت ہے جس کیلئے ہم ہر فورم پر آواز اٹھائیں گے۔انہوں نے کہا کہ عوامی رکشہ یونین کے مسائل کے حل کیلئے جب بھی ہم نے اجمشید دستی کو دعوت دی وہ سر کے بل پہنچ گیا ایسے افراد ہمارے معاشرے کے ماتھے کا جھومر ہیں۔ہمارا اس کی سیاسی پارٹی سے کوئی تعلق نہیں لیکن غریبوں ، کسانوں اور مزدوروں کیلئے جو بھی آواز اٹھائے گا عوامی رکشہ یونین اس کے شانہ بشانہ ہوگی ۔مجید غوری نے مطالبہ کیا کہ جمشید دستی پر سے جھوٹے مقدمات خارج کرکے اسے فوری طور پر رہا کیا جائے ورنہ 72گھنٹوں بعد پوری قوت کے ساتھ جمشید دستی کی رہائی کی تحریک چلائیں گے۔مظاہرین سے حافظ مظہر جیلانی، حاجی رفاقت، عزیز عباسی، ذیشان اکمل، نصراللہ یوسف، فیاض شاہ،نذیر ساحل، وارث جوئیہ،فیصل مہرجگا و دیگر نے بھی خطاب کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1