حکومت چینی تاجروں کو پاکستانی ایس ایم ایزمیں سرمایہ کاری کیلئے راغب کرے

حکومت چینی تاجروں کو پاکستانی ایس ایم ایزمیں سرمایہ کاری کیلئے راغب کرے

اسلام آباد(کامر س ڈیسک)ایف پی سی سی آئی کی ریجنل کمیٹی برائے صنعت کے چئیرمین عاطف اکرام شیخ نے کہا ہے کہ حکومت چینی تاجروں کو پاکستان کے ایس ایم ای سیکٹر میں سرمایہ کاری کیلئے راغب کرنے کیلئے جامع منصوبہ بنائے۔ اس سے پاکستان کا ایس ایم ای سیکٹر ترقی کرے گا اور بین الاقوامی منڈی میں قدم جمانے کے قابل ہو جائے گا جس سے برامدات اور روزگار میں اضافہ اور غربت میں کمی ہو گی۔ عاطف اکرام شیخ نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ سی پیک کے ساتھ بنائے جانے والی صنعتی بستیوں میں پاکستانی اور چینی بزنس مین جائنٹ وینچرز شروع کریں جس سے پاکستانی ایس ایم ایز جدت کی راہ پر چل پڑیں گی۔ انھوں نے کہا کہ بہت سے مشہور مغربی کمپنیاں پاکستان سے اپنی مصنوعات بنوا کر خود بین الاقوامی منڈی میں فروخت کرتی ہیں جبکہ مقامی کمپنیوں کو معمولی منافع پر ٹرخا دیا جاتا ہے جس کا حل نکالنا ضروری ہو گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ایس ایم ای سیکٹر کی ترقی کے بغیر معاشی عدم مساوات کا خاتمہ ناممکن ہے اسلئے چین بھی پاکستان کے اس شعبہ تو ترقی یافتہ بنانے کی بھرپور مدد کرنے جسکی ابتداء ٹیکنالوجی ٹرانسفر سے ہو۔ جن شعبوں میں دونوں ممالک کے بزنس مین مل کر کام کر سکتے ہیں ان میں لاجسٹکس، ٹرکنگ، وئیرہاؤسنگ، فشریز، ہارٹی کلچر، معدنیات، فوڈ پراسسنگ، آلات جراہی، کنسٹرکشن، ڈیری، لائیوسٹاک، انفارمیشن ٹیکنالوجی، انجیئرنگ، ملبوسات، کولڈ سٹوریج اور سپلائی چین بزنس شامل ہیں۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان میں نوے فیصد کاروبار ایس ایم ای کے زمرے میں آتے ہیں جبکہ ایسے کاروبار کیہ تعداد بتیس لاکھ ہے۔

زراعت کو چھوڑ کر ستر فیصد افراد کو یہ شعبہ روزگار فراہم کر رہا ہے جبکہ جی ڈی پی میں اسکا حصہ تیس فیصد اور برامدات میں اسکا حصہ پچیس فیصد ہے۔ ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل میں ایس ایم ایز کا حصہ پینتیس فیصد ہے۔

مزید : کامرس