پاکستان کی سرزمین کامیڈی کے حوالے سے ناقابل یقین کی حدتک زرخیز ہے

پاکستان کی سرزمین کامیڈی کے حوالے سے ناقابل یقین کی حدتک زرخیز ہے
 پاکستان کی سرزمین کامیڈی کے حوالے سے ناقابل یقین کی حدتک زرخیز ہے

  

لاہور( فلم رپورٹر )پاکستان کی سرزمین کامیڈی کے حوالے سے ناقابل حدتک زرخیز ہے اور اللہ نے ایسے ایسے ستارے کامیڈی کی کہکشاں پر پیدا کئے جنہوں نے ناصرف پاکستان میں عوام کو ہنسایا بلکہ بین الاقوامی سطح پربھی پاکستان کا نام روشن کیا ایسے ہی ایک فنکارطارق محمود جیکسن ہیں جنہوں نے بہت کم عرصے میں بہت زیادہ نام بنا یا ہے اور ایسا ہر فنکار کی قسمت میں نہیں ہوتا۔ان کا شمار ایسے فنکاروں میں ہوتا ہے جنہوں نے کیرئیر میں اپنی جگہ بنانے کے لئے کسی بھی قسم کے کام کو عار نہیں سمجھاکردار چاہے سنجیدہ ہو یا غیر سنجیدہ اپنا ہونا ثابت کرنا ان کا خاصہ ہے ۔ہمارے ملک میں ٹیلنٹ کی کوئی قدر نہیں ہے ہمارے فنکاروں کو وہ پذیرائی نہیں ملتی جبکہ دیگر ممالک میں فنکاروں کی قدرو منزلت بہت زیادہ ہے۔ہمارے ملک کی جڑوں کو کھوکھلاکرنے میں کرپشن نے اہم کردار ادا کیا ہے ۔ان خیالات کا اظہار بین الاقوامی شہرت کے حامل کامیڈین طارق محمود جیکسن نے ’’پاکستان فورم‘‘میں کیا۔طارق محمود جیکسن سے ہونے والی دلچسپ مگر مختصربات چیت قارئین کی نذر ہے۔طارق محمود جیکسن نے کہا کہ ہمارے ملک میں ثقافت کے فروغ کے لئے بنائے جانے والے ادارے وہ کام نہیں کررہے جس مقصد کے لئے ان کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔میرا شمار پاکستان کے ان فنکاروں میں ہوتا ہے جنہوں نے اپنی فنّی صلاحیتوں سے دشمن ملک بھارت میں بھی اپنے ملک و قوم کا نام روشن کیا ہے ۔طارق محمود جیکسن نے کہا کہ میں پہلا پاکستانی کامیڈین تھا جس کا بھارتی چینل کے شہرہ آفاق پروگرام’’لافٹر چیلنج‘‘کے لئے کیا گیا۔میں نے ’’لافٹر چیلنج‘‘میں اپنے فن کا لازوال مظاہرہ کرکے ثابت کیا تھا کہ ہم پاکستانی دنیا میں کسی سے کم نہیں ہیں ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں ثقافتی پروگرام نہ ہونے کے برابر ہیں اس کے ساتھ ساتھ شادی کی تقریبات پر وقت کی پابندی نے بھی فنکاروں کی معاشی مشکلات میں اضافہ کیا ہے شادیوں میں وقت کی پابندی نے فنکاروں کی روزی روٹی میں کمی تو کی ہی ہے اس کے ساتھ ساتھ عوام کو بھی تفریح سے محروم کردیا ہے۔طارق محمود جیکسن نے مزید کہا کہ میرا حکومت سے مطالبہ ہے کہ گزشتہ دس سالوں کے دوران شادی اور دیگر تقریبات پر وقت کی پابندی کی وجہ سے فنکاروں کا جو کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے اس کا ازالہ کیا جائے میں ان دس سالوں کے دوران تقریباً 30لاکھ روپے کا مقروض ہوگیا ہوں ۔اگر میرے نقصان کا ازالہ نہ کیا گیا تو میں انصاف کے لئے عدالت کا دروازہ کھٹکٹانے پر مجبور ہوجاؤں گا۔میں فنکاروں ،کھلاڑیوں اور ادیبوں کی فلاح و بہبود کے لئے ایک ادارہ بنانے کا ارادہ رکھتا ہوں ۔میں تو یہ کہتا ہوں کہ اگر شادی بیاہ اور دیگر تقریبات پر وقت کی پابندی کا اطلاق ہوتا ہے تو یہ پابندی ٹی وی چینلز اور کاروباری اداروں پر لاگو کیوں نہیں ہوتی ان کو بھی وقت پر بند کرنے کا پابند کیا جانا چاہیے۔طارق محمود جیکسن نے کہا کہ اگر حکومت مجھ سے تعاون کرے تو پاکستان کے 20کروڑ عوام کے لئے تفریح کے ذریعے ایسے طریقے سے عوام کو آگاہی فراہم کریں کہ ملک سے کرپشن کا مکمل خاتمہ ہوجائے ہماری عوام قانون کی پاسداری کرنے کے ساتھ ساتھ دہشت گردی لعنت سے بھی چھٹکارہ پا لیں۔

مزید : کلچر