پاناما کیس : جے آئی ٹی کا قطری شہزادے سے دوحہ جا کر پوچھ گچھ کا فیصلہ

پاناما کیس : جے آئی ٹی کا قطری شہزادے سے دوحہ جا کر پوچھ گچھ کا فیصلہ

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پانامہ کیس کی تحقیقات میں مصروف مشترکہ تحقیقاتی ٹیم ( جے آئی ٹی)نے قطری شہزادے سے دوحہ جا کر بیا ن ریکارڈکرنے اور کیس کی تحقیقات کرنے کا فیصلہ کیا ہے ،نجی ٹی وی کے مطابق اس ضمن میں جے آئی کے 2ارکان کو قطری شہزادے سے پوچھ گچھ کیلئے دوحہ بھیجے جانے کی تیاریاں شروع کر دی گئی ہیں جبکہ ذرائع کا کہنا ہے اس ضمن میں جے آئی ٹی نے ارکان کے قطر جانے کیلئے سپریم کورٹ کے رجسٹرار آفس سے رابطہ بھی کر لیا ہے کیونکہ جے آئی ٹی ارکان کے بیرون ملک جانے کیلئے سپریم کورٹ کے پانامہ عملدرآمد بینچ کی اجازت لازمی ہے۔ ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ بینچ کی اجازت ملتے ہی 2 ارکان دوحہ روانہ ہو جائیں گے۔ یاد رہے قطری شہزادہ حماد بن جاسم الثانی نے جے آئی ٹی کو خط میں بیان ریکارڈ کرنے کیلئے قطر آنے کا کہا تھا۔قبل ازیں سپریم کورٹ نے پانامہ لیکس کی تحقیقات کرنیوالی جے آئی ٹی کو دھمکیوں اور شکایات سے متعلق کیس کی سماعت سوموار تک ملتوی کردی ، گزشتہ روز کیس کی مختصر سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل عدالت عظمیٰ کے خصوصی پانامہ عملدرآمد بینچ نے کی، کیس کی سماعت شروع ہوئی تو اٹارنی جنرل اشتراوصاف پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ ڈیڑھ بجے کیس میں پیش نہیں ہوسکتا، سینٹ کی قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کیلئے جانا ہے، اس پر جسٹس اعجاز افضل نے کہا جے آئی ٹی نے پیغام بھیجا تھا وہ ساڑھے گیارہ بجے پیش نہیں ہوسکتے ،جے آئی ٹی ارکان کی عدم دستیابی کے باعث کیس کی سماعت ڈیڑھ بجے رکھی تھی ،اس پر اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ کیس کی سماعت منگل تک ملتوی کردی جائے، تاہم عدالت نے اٹارنی جنرل کی استدعا مسترد کرتے ہوئے کیس کی سماعت سوموار تک ملتوی کردی۔

جے آئی ٹی فیصلہ

مزید : صفحہ اول