امریکا میں خطرناک زلزلے کا خدشہ

امریکا میں خطرناک زلزلے کا خدشہ

لاس اینجلس (مانیٹرنگ ڈیسک) سائنسدانوں نے امریکا میں بڑے زلزلے کی پیشگوئی کر کے سب کو چونکا دیا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ زلزلہ اتنا ایٹمی بم کے حملے سے بھی زیادہ شدید اور خطرناک ہو سکتا ہے۔ یہ زلزلہ اتنا شدید ہو گا کہ اس سے بلند وبالا عمارتیں، ہائی وے اور ریلوے نظام سمیت سب کچھ منٹوں میں ملیا میٹ اور تباہ و برباد ہو سکتا ہے۔سائنسدانوں نے اس شدید زلزلے کی جگہ امریکی ریاست کیلیفورنیا کے شہروں لاس اینجلس اور سان فرانسسکو کو قرار دیا ہے۔ امریکی جیولوجکل سروے کے مطابق ریکٹر سکیل پر اس زلزلے کی شدت ا?ٹھ اعشاریہ دو یا اس سے بھی بڑھ کر ہو سکتی ہے۔ اس شدید زلزلے سے زمین 30 فٹ تک پھٹ جانے کا خطرہ ہے۔ خیال رہے کہ دوسری جنگ عظیم میں امریکی افواج نے جاپانی شہر ہیروشیما پر جو ایٹمی بم گرایا تھا اس کی شدت چھ اعشاریہ صفر تھی۔ امریکی جیولوجکل سروے کی ماہر کیٹ شیرر کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ سان اینڈرس فالٹ لائن بھی خطرے سے خالی نہیں ہے جہاں ایک چھوٹے ایٹمی بم جتنی شدت کا زلزلہ آ سکتا ہے۔ تاہم ان کا کہنا ہے کہ یہ شدید زلزلہ کب ا?ئے گا؟ اس کے حتمی وقت کا تعین ابھی تک ممکن نہیں ہے

مزید : صفحہ اول