بھارت میں داعش کا ریکروٹر شفیع آرمر دہشت گرد قرار

بھارت میں داعش کا ریکروٹر شفیع آرمر دہشت گرد قرار

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) امریکی وزارت خارجہ نے بھارت میں داعش کے اہم ترین کارندے اور ریکروٹر محمد شفیع آرمر کو دہشت گرد قرار دے دیا ۔ اس کے علاوہ آج گزشتہ روزجاری ہونے والی فہرست میں دو نئے افراد بھی شامل ہیں۔ ان میں سے ایک اسامہ احمد عطار ہے جو داعش کے بیرونی آپریشنز کا سینئر لیڈر ہے اور مراکش نژاد بلجیم کا شہری ہے۔ دوسرے عیسیٰ یوسف بنالی کا تعلق بحرین سے ہے، جو وہاں داعش کیلئے پراپیگنڈاویڈیو تیار کرتا تھا۔گزشتہ دسمبر کے بعد پہلی مرتبہ جنوبی ایشیاء سے تعلق رکھنے واے کسی فرد کو امریکی وزارت خارجہ نے دہشت گرد قرار دیا ہے۔ 30 مارچ 2017ء کو ایک پاکستانی نژاد برطانوی شہری انجم چودھری کو بھی دہشت گرد قرار دیا گیا تھا، جو اس وقت برطانیہ کی جیل میں ہے ،جس نے اعلان کر رکھا ہے کہ وہ جیل میں سے بھی داعش کے لئے بھرتی کرنے کا کام جاری رکھے گا۔27 سالہ بھارتی مسلمان شفیع آرمر جسے دہشت گرد قرار دیا گیا ہے، بھارتی صوبے کرناٹک کے شہر بھٹکل کا رہائشی ہے۔ وہ سلطان آرمر کا چھوٹا بھائی ہے، جس نے بھارت میں ’’النصار التوحید‘‘ نامی تنظیم کی بنیاد رکھی ہے اور دونوں بھائی مل کر اس کیلئے کام کرتے تھے اوربعد میں وہ داعش میں شامل ہوگئے تھے۔ سلطان شام میں جاکر لڑائی میں مارا گیا تھا۔ دونوں بھائی قبل ازیں کالعدم تنظیم ’’انڈین مجاہدین‘‘ میں بھی شامل رہے ہیں۔ شفیع آرمر انٹرپول کو بھی مطلوب ہے جس کے بارے میں شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ وہ بھارت سے فرار ہوکر پاکستان میں کسی خفیہ مقام پر پہنچ گیا ہے۔جمعرات کو جاری ہونے والی امریکی وزارت خارجہ کی دہشت گرد قرار دئیے جانے والے افراد کی فہرست میں شامل اسامہ احمد عطار پر الزام ہے کہ وہ داعش کیلئے پورے یورپ سے رضاکار بھرتی کرتا تھا اور نومبر 2015ء میں پیرس اور مارچ 2016ء میں برسلز میں حملوں کی منصوبہ بندی میں ملوث تھا۔ تیسرا فرد عیسیٰ یوسف بنالی 2014ء میں بحرین چھوڑ کر داعش کی تنظیم میں شمولیت کیلئے عراق اور شام میں آگیا تھا، جس کا اہم ترین کام دہشت گرد تنظیم کے لئے پراپیگنڈا ویڈیو تیار کرنا ہے۔

شفیع آرمر

مزید : صفحہ اول