پا ک بھارت مذاکرات میں روس کی ثالثی کا خیر مقدم کرتے ہیں : پاکستان

پا ک بھارت مذاکرات میں روس کی ثالثی کا خیر مقدم کرتے ہیں : پاکستان

اسلام آباد (آن لائن) روسی صدر پیوٹن کی جانب سے پاک بھارت مذاکرات میں ثالثی کی پیشکش کو خوش آمدید کہتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ بھارتی جارحیت کے باعث خطے میں بنی ہوئی صورتحال کے پیش نظر روس اقوام متحدہ اور دیگر اداروں کی جانب سے اس خدشے کا اظہارکیا جارہا ہے کہ اس صورتحال سے خطے میں امن و سلامتی کو خطرہ ہوسکتا ہے۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز میڈیا کو دی گئی ہفت روزہ بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کے روس کے ساتھ تعلقات کواہمیت دیتا ہے اور شنگھائی تعاون تنظیم کے حالیہ اجلاس میں وزیراعظم نواز شریف کی روسی صدر پیوٹن کے ساتھ ملاقات میں مختلف پہلوؤں پر بات چیت ہوئی۔ صدر پیوٹن نے کہا کہ جب بھی پاکستان کے دورہ کرے کا فیصلہ کیا پاکستان اسے خوش آمدید کہتے گا ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف کے سعودی عرب کے حالیہ دورے میں سعودی عرب کے فرمامنرواکے ساتھ ملاقات میں مشرق وسطی میں جاری کشیدگی کے حوالے سے بات چیت کی اور پاکستان کی جانب سے حرم پاک کی مکمل حفاظت کا یقین دلایا گیا۔ انہوں نے کہا کہ کوئٹہ میں قتل کئے گئے چینی جوڑے کا سی پیک منصوبے سے کوئی تعلق نہیں تھا اور اس حوالے سے چین کی حکومت کے ساتھ رابطے میں ہیں اور اس حوالے سے جو بھی پیش رفت ہوگی اس سے چینی حکومت کو آگاہ کیاجائے گا ۔چین کی پاک افغان کشیدگی کم کرنے کے حوالے سے سوال کے جواب میں نفیس زکریا نے کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان مثالی تعلقات موجود ہیں اور بات چیت کی وجہ سے ہی ہارٹ آف ایشیا اور دیگر اقدامات کے ذریعے افغانستان میں قیام امن کیلئے کوششوں میں پاکستان کے ساتھ شریک عمل ہے اور پاکستان چین کی جانب سے کردار ادا کرنے کے بیان کو خوش آمدید کہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ افغانستان میں بیٹھ کرپاکستان کیخلاف بیان دیتے ہیں وہ افغانستان میں جاری امن اور استحکام کی کوششوں کو ناکام بنانا چاہتے ہیں جبکہ پاکستان افغانستان میں امن و سلامتی چاہتا ہے جو کہ پاکستان کے حق میں بھی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف کے سعودی عرب کے حالیہ مختصر دورے میں وزیراعظم کا پرتپاک استقبال کیا گیا، ان کی سعودی عرب کے فرماں رواں شاہ سلمان اور دیگر قیادت کیساتھ ملاقاتوں میں مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی پر تبادلہ خیال ہوا اور پاکستان نے حرم پاک کی حفاظت کی یقین دہانی کرائی ہے ۔انہوں نے کہا کہ قطر میں پاکستانی فوجی دستے بھیجنے کے حوالے سے غیر ملکی میڈیا میں جوغلط خبریں چلی تھی ان کی دفتر خارجہ تردید کرچکا ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے فاٹا میں امریکی ڈرون حملے اوراس میں مارے جانے والے داعش کے سرکردہ رہنماؤں کے بارے میں آنے والی خبروں پر تبصرے سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ اس حوالے سے پاک فوج کا بیان آچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماہ رمضان کے دوران بھارتی قابض فوجیوں نے کشمیر میں 25 سے زائد کشمیریوں کو شہید کیا جس میں بچے بھی شامل ہیں اور 200 سے زائد کو زخمی کیا ہے تاہم کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر پاکستان کی جانب سے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے حالیہ اجلاس میں آواز اٹھائی تھی۔ ترجمان نے کہا کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے فائنل میں پہنچنے پر کشمیر میں خوشی منانے والوں کوبھارتی فوج نے سزا کے طورپران کی دکانوں کولوٹا۔انہوں نے بھارتی آرمی چیف اور بھارتی عسکریت پسندتنظیموں کے نمائندگان کی جانب سے کشمیریوں کیخلاف دیئے گئے بیانات کی مذمت بھی کی ہے ۔

پاکستان

 

مزید : صفحہ اول