کشمیریوں کا طویل عرصہ سے قربانیاں پیش کرنا قابل تحسین ہے،حافظ عبدالرحمان

کشمیریوں کا طویل عرصہ سے قربانیاں پیش کرنا قابل تحسین ہے،حافظ عبدالرحمان

لاہور(پ ر )جماعۃالدعوۃ سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے کہا ہے کہ مظلوم کشمیریوں کا طویل عرصہ سے لازوال قربانیاں پیش کرنا قابل تحسین ہے۔تحریک آزادی کشمیر کو سبو تاژکرنے کی بھارتی سازشیں ناکام ہو چکیں۔حافظ محمد سعید کو سال 2017 کشمیر کے نام کرنے پر نظربند کیا گیا۔کشمیر ہماری رگوں میں خون کی طرح دوڑتا ہے‘ کشمیریوں کو بھارت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑ سکتے۔

پاکستانی قوم تحریک آزادی میں کشمیریوں کے ساتھ قدم سے قدم اور کندھے سے کندھا ملا کر کھڑی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز طیبہ شادمان کالونی گجرات میں افطار ڈنرکے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔حافظ عبدالرحمان مکی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں آٹھ لاکھ بھارتی فوج کے بدترین مظالم سے ثابت ہو گیا کہ انڈیا کے پاس سوائے ظلم و تشدد کے اور کوئی چیز نہیں ہے۔ آٹھ لاکھ بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کے ذریعہ غیور کشمیریوں کو غلام بنا کر رکھنے کیلئے تمامتر حربے استعمال کئے۔ ان کی عزتوں، جان ومال اور املاک پر حملے کئے گئے لیکن ان بدترین مظالم اور دہشت گردی کے باوجود کشمیریوں نے اپنی جدوجہد آزادی کو جاری رکھا اور بھارت کے غاصبانہ قبضہ کو کسی صورت قبول کرنے سے انکار کیا۔ یہ ان کی قربانیوں کا ثمر ہے کہ آج مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے پوری دنیا میں آوازیں بلند ہو رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ جماعۃ الدعوۃ نے سال2017کو کشمیر کے نام کیا اور ملک بھر میں کشمیر کے حوالہ سے مہم کا آغاز کیا تو حکمرانوں نے بھارتی دباؤ میں�آکر امیر جماعۃ الدعوۃ پروفیسر حافظ محمد سعید کو نظربند کر دیا۔انہوں نے کہا کہ انڈیا سمجھتا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز میں اجاگر کرنے اور اس کے مذموم ایجنڈوں کی تکمیل کی راہ میں جماعۃالدعوۃ سب سے بڑی رکاوٹ ہے

مزید : میٹروپولیٹن 4