امریکا مشترکہ جامع ایکشن پلان کی پابندی کرے: ایران

امریکا مشترکہ جامع ایکشن پلان کی پابندی کرے: ایران

ویانا(اے پی پی) جوہری توانائی کی عالمی ایجنسی میں ایران کے مندوب نے تاکید کے ساتھ کہا ہے کہ امریکا کو مشترکہ جامع ایکشن پلان پر عمل کرنا چاہئے۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق جوہری توانائی کی عالمی ایجنسی میں ایران کے نمائندے رضا نجفی نے بورڈ آف گورنرس کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اکثر رکن ممالک کی جانب سے مشترکہ جامع ایکشن پلان جاری رہنے کی حمایت کی گئی ہے۔ عالمی ایجنسی میں ایران کے نمائندے نے اس اجلاس میں ایران کی جانب سے ایٹمی معاہدے کی مکمل پابندی کرنے پر مبنی آئی اے ای اے کی رپورٹ کی جانب اشارہ کرتے ہوئے تاکید کے ساتھ کہا کہ مشترکہ جامع ایکشن پلان کو جاری رکھنے اور اس کی پابندی کرنے کاانحصارگروپ پانچ جمع ایک کے رکن ممالک کی جانب سے بھی اس معاہدے کی پابندی کرنے پر ہے۔رضا نجفی نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ صرف مشترکہ جامع ایکشن پلان کے مشترکہ نگراں کمیشن کے اراکین کو ہی اس کی شقوں کی تشریح کرنے کا حق ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایران نے اس اجلاس میں تاکید کی ہے کہ مشترکہ جامع ایکشن پلان کی تشریح ، بورڈ آف گورنرس کے اجلاس میں نہیں ہونا چاہئے۔واضح رہے کہ ویانا میں 5 روزہ بورڈ آف گورنرز کا اجلاس (آج) جمعہ کو اختتام پذیر ہو گا۔

مزید : عالمی منظر