اپوزیشن کی 200سے زائد کٹوتی کی تحاریک مسترد،سندھ اسمبلی :ایک کھرب سے زائد کا ضمنی بجٹ کثرت رائے سے منظور

اپوزیشن کی 200سے زائد کٹوتی کی تحاریک مسترد،سندھ اسمبلی :ایک کھرب سے زائد کا ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ اسمبلی کے اجلاس میں 2016-17 کا ایک کھرب سے زائد کا ضمنی بجٹ کثرت رائے سے منظور کر لیا گیا ۔مختلف مطالبات زر پر اپوزیشن کی 200 سے زائد کٹوتی کی تحاریک مسترد کر دی گئیں ۔ سندھ اسمبلی کا اجلاس تقریباً 7 گھنٹے تک جاری رہا ۔ قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن نے اپنی بجٹ تقریر مکمل کی جبکہ وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بجٹ پر بحث کو سمیٹا ۔ اجلاس میں وصول شدہ اخراجات پر بحث بھی ہوئی ۔ سندھ کا مالیاتی سال 2017-18 کا بجٹ ( جمعہ ) کو منظور ہونے کا امکان ہے ۔ جمعرات کو اپنی ادھوری تقرری کا آغاز کرتے ہوئے خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ انہوں نے کہاکہ لوڈشیڈنگ کے معاملے پر مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کی غیر سنجیدگی نظر آ رہی ہے اور دونوں جماعتیں لوڈشیڈنگ پر جو احتجاج کر رہی ہیں ، وہ ملی بھگت کا نتیجہ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ تھر کول منصوبے پر ہمیں کوئی اعتراض نہیں ہے ۔ اگر اس منصوبے سے 2015 میں بجلی کی پیداوار شروع ہونی چاہئے تھی ۔ انہوں نے سندھ میں لینڈ ریفارمز اور زرعی انکم ٹیکس کے نفاذ کا بھی مطالبہ کیا ۔ انہوں نے گلشن اقبال کے باغات کی اراضی فروخت کنے کا معاملہ ایوان میں اٹھایا اور کہاکہ 25 ایکڑ زمین کوڑیوں کے مول بیچنے کی تیاری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ کراچی کی زمین فروخت کرنے کا اختیار کس نے دیا ہے ۔ دبئی کٹنگ ہو یا چائنا کٹنگ ہر قسم کی غیر قانونی کٹنگ بند ہونی چاہئے ۔ ایگری کلچر کی اسکیم میں کنفیوژن ہے ۔ بجٹ بک کی ٹوٹل اسکیم میں تضاد اور شبہات ہیں ۔ تمام محکموں میں حکومتی کارکردگی صفر ہے ۔ 21 ارب روپے کی اسکیمیں برسوں سے جاری ہیں ۔ 2008 ء کی اسکیمیں 2017 میں بھی ٹم نہیں ہو پا رہی ہیں ۔ بیرونی امداد سے چلنے والی اسکیمیں بھی نامکمل ہیں ۔ ایگری کلچر پر بھاری رقم خرچ کرنے کے باوجود بندٹوٹنے کی خبریں منظر عام پر آتی ہیں ۔ حکومت کی ایک ہزار ارب روپے خرچ کرنے کے باوجود کارکردگی دیکھیں تو ڈھاک کے وہی تین پات ۔ صوبائی وزیر کلچر سید سردار شاہ اپنے محکمہ کو بدلنے کے لیے کوششش کر رہے ہیں ۔ کلچر اور سیاحت کے محکمہ کو 210 ملین دینا ناکافی ہے ۔ اگر اس محکمہ کو زیادہ فنڈز ملتے تو حکومت کو فائدہ ہوتا ۔ محکمہ کلچر کی 36 اسکیموں میں صرف 7 کروڑ روپے کی دو اسکیمیں مکمل ہو ئی ہیں ۔ بجٹ بک میں بہت ساری اسکیموں میں گذشتہ 10، 12 سالوں سے صرف سال تبدیل کیا گیا ہے اور ہر سال سن تبدیل کرکے پرانی اسکیم دوبارہ نئی بنا دی جاتی ہے ۔ مگر یہ نہیں بتایا جاتا کہ اسکیم مکمل کیوں نہیں ہوئی ۔ موئنجو دڑو سمیت تاریخی مقامات سے مورتیاں چوری ہونے ، نوادرات غائب ہونے کی خبریں بین الاقوامی میڈیا میں شائع ہوئی ہیں ۔ اگر حکومت سندھ تاریخی مقامات کی حفاظت نہیں کر سکتی تو انہیں دفن کر دے تاکہ وہ محفوظ ہو جائیں ۔ خواجہ اظہار الحسن نے کہاکہ نائلہ منیر نے احساس محرومی کا جو معاملہ ایوان میں اٹھایا، اس پر غور کیا جائے ۔ جلد بازی کی بجائے حقائق کو مد نظر رکھا جائے ۔ پیپلز پارٹی جہاں سے جیت جائے ، وہ تو ٹھیک مگر جہاں شکست ہو جائے ، اسے اجاڑنے کی قسم کھا رکھی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم لسانی تقسیم یاتعصب کی بات نہیں کرتے لیکن اپنے حق سے دستبردار نہیں ہوں گے ۔ کچھ لوگوں نے شرم دلانے کی بات کی ہے ۔ اس کی ضرورت نہیں ہے ۔ کراچی کے ساتھ جو زیادتی ہو رہی ہے ۔ اس پر خاموش نہیں رہ سکتے ۔ کراچی کے ساتھ ظلم ہو رہا ہے ۔ مگر ایوان میں بیٹھے صاحب اقتدار ہماری طرف پیٹھ کر بیٹھے رہے ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ واحد صوبہ ہے ، جہاں زبان اور کلچر کی تقسیم ہے ۔ ایم کیو ایم نے ہمیشہ اس تقسیم کو ختم کرنے کی بات کی ہے ۔ ہم لیاقت علی خان ، بانی پاکستان کی آواز پر آئے تھے ۔ پیپلز پارٹی کے کہنے پر پاکستان نہیں آئے ۔ ہجرت کے متعلق بڑی بڑی باتیں کرنے کی بجائے حقائق پر بات کریں ۔ اگر آئندہ کسی نے ہم پر الزام تراشی کی بات کی تو ہم بھی حقائق سے پردہ اٹھائیں گے ۔ آپ سمیت اسٹیبلشمنٹ سے کہتا ہوں کہ میری قوم کے ساتھ ہونے والی زیادتی کا نوٹس لیا جائے ۔ ماورائے عدالت قتل کا نوٹس لیا جائے ۔ وزیر اعلیٰ سندھ آپ ہمارے ساتھ ہونے والی زیادتیوں سے بری الذمہ نہیں ہیں ۔ مگر ہم پر الزام تراشیاں کرکے زخموں پر نمک پاشی نہ کی جائے ۔ کراچی میں 10 ہزار افراد پیپلز پارٹی کے ہوم منسٹرز کے دور میں مارے گئے ۔ سندھ کی جیلوں کے لیے حکومت نے اربوں روپے رکھے ہیں ۔ جیل سے قیدیوں کے فرار کے بعد ملاقاتیوں پر سختی سے گریز کیا جائے ۔ ہوم ڈیپارٹمنٹ میں 15 ارب روپے کی اسکیمیں کئی برسوں سے جاری ہیں ۔ پتہ نہیں حکومت سندھ کو سی سی ٹی وی کیمرے کیوں نہیں ملتے ۔ میں کراچی کے شہریوں سے کہتا ہوں کہ وہ اپنے گھروں پر رضا کارانہ طور پر اپنی سکیورٹی کے لیے کیمرے لگائیں تاکہ کسی کے ساتھ جمال احمد والا معاملہ نہ ہو ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ نے محکمہ داخلہ کے لیے 92 ارب روپے رکھے مگر تھانوں میں بجلی ہے نہ پانی ۔ فون بھی کٹے ہوئے ہیں ۔ ملزم کو پکڑنا ہو تو ڈیزل بھی مدعی کو دینا پڑتا ہے ۔ محکمہ صحت میں اصلاحات کے لیے نظام بہتر کرنے کی ضرورت ہے ۔ جب تک سختی نہیں کی جائے گی ، معاملات بہت نہیں ہوں گے ۔ محکمہ سحت کے بہت سے منصوبے ادھورے رہ گئے ۔ نواب شاہ سمیت مختلف شہروں میں محکمہ سخت کے کئی منصوبے نامکمل ہیں ۔ 105 ارب روپے محکمہ صحت کے لیے رکھنا مسئلہ نہیں مگر اسے خرچ کرنا اصل چیز ہے ۔ حکومت صحت کے منصوبوں پر جاری کردہ فنڈز خرچ نہیں کر سکی ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم کی کارکردگی میں بہتری کی ضرورت ہے ۔ میٹرک پاس کرنے والی بچیوں کو ایک لاکھ روپے وظیفہ ملنا چاہئے ۔ اس سے انرولمنٹ میں اضافہ ہو گا ۔ نیو کراچی میں میرے گھر کے سامنے اسکول ہے ۔ اس کی حالت بہتر کرنے کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا ۔ کالجز کی 9 عمارتیں مکمل ہونے کے باوجود محکمہ تعلیم کے حوالے نہیں کی جا رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم میں انرولمنٹ سے متعلق اعداد و شمار درست نہیں ہیں ۔ محکمہ تعلیم ہر دور میں متنازع رہی ہے ۔ محکمہ تعلیم پر عدالتوں میں ایک سو زائد کیسز ہیں ۔ اسی محکمے میں سب سے پہلے نیب کا مقدمہ درج ہوا ۔ تعلیمی اعتبار سے سندھ اگر دیگر صوبوں کے مقابلے میں آخری نمبر پر آ رہا ہے تو اس کی ذمہ دار حکومت ہے ۔ ان حالات میں کوئی اپنے بچے کو سرکاری اسکول میں داخل نہیں کرائے گا ۔ اسکولوں میں پانی ہے نہ بیت الخلاء ، سرکاری اسکولوں میں ہم نسل نو کو تباہ کر رہے ہیں ۔ خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ پنجاب اور خیبر پختونخوا تعلیمی معیار میں سندھ سے آگے ہیں ۔ شتر مرغ ک طرح منہ ریت میں دبانے سے کچھ نہیں ہو گا ۔ ریت سے منہ نکال کر حقائق کا مشاہدہ کریں ۔ محکمہ تعلیم کی 70 سے زائد اسکیمیں 2008 سے نامکمل ہیں ۔ وزیر تعلیم سندھ نے دعویٰ کیا تھا کہ میری زندگی میں حیدر آباد میں یونیورسٹی نہیں بن سکتی ۔ محض تقریریں کرنے کی بجائے حکومت سندھ محکمہ تعلیم پر توجہ دے ۔ گذشتہ بجٹ میں محکمہ تعلیم میں صرف 38 فیصد فنڈز خرچ کیے جا سکے ۔ جام مہتاب ڈاہر کا احترام ہے مگر خرم شیر زمان کے لیے انہیں اخلاقیات کے منافی ریمارکس نہیں دینے چاہئے تھے ۔ سپریم کورٹ نے پبلک سروس کمیشن کا احتساب کیا ہے ۔ بشمول چیئرمین پبلک سروس کمیشن کا ایک بھی اہلکار تعلیمی قابلیت کے اعتبار سے اہل نہیں ہے ۔ کراچی کے ڈھائی سو لیکچررز کی ضرورت ہے ۔ مگر بھرتیاں نہیں کی جا رہی ہیں ۔ جب بھی بھرتی کا معاملہ آتا ہے تو رورل کوٹے پر سو فیصد بھرتیاں نہیں کی جا تی ہیں اور اربن کوٹے کو نظرانداز کر دیا جاتا ہے ۔ پبلک سروس کمیشن سندھ کی حالت یہ ہے کہ سندھی زبان کے ماہر اور گولڈ میڈلسٹ کو پبلک سروس کمیشن نے مسترد کر دیا ہے ۔ سندھ پبلک سروس کمیشن نااہل افسران پر مشتمل ادارہ ہے ۔ نوکری کے لیے پوچھا جاتا ہے کہ سندھی زبان آتی ہے ۔ جواب نہ کی صورت میں آنے پر کہا جاتا ہے کہ نوکری کیسے کرو گے ۔ پبلک سروس کمیشن کے معاملے پر میں حکومت سندھ کے خلاف عدالت میں پٹیشن کرنے جا رہا ہوں ۔ سندھ میں ایسے لوگوں کو ملازمتیں دی گئیں ، جنہوں نے ایک روز قبل ڈومیسائل بنایا اور اگلے روز اسے تقرر نامہ جاری کردیا گیا ۔ حکومت قواعد و ضوابط کے خلاف جاری ہونے والے ڈومیسائل کو روکان نہیں چاہتی ۔ انہوں نے کہا کہ اسپورٹس کے محکمہ کی کئی اسکیمز خارج ک ردی گئی ہیں ۔ محکمہ معدنیات خود کو ہی اہمیت نہیں دیتی تو میں بھی اس پر بات نہیں کرنا چاہتا ۔ حکومت جیکب آباد ، میرپورخاص اور عمر کوٹ میں خواتین کے لیے سینٹر قائم کرے ۔ کراچی کی بات ضرور کریں مگر ہر ایم پی اے کو پہلے اپنے حلقہ کی بھی فکر کرنی چاہئے ۔ پورے سندھ میں سب سے زہریلا پانی جیکب آباد کے شہری پینے پر مجبور ہیں ۔ جیکب آباد سے منتخب ارکان کراچی پر بات کرنے کی بجائے اپنے حلقے کی بھی فکر کریں ۔ خواجہ اظہار الھسن نے ایوان سے سوال کیا کہ کوئی ایک رکن بتا سکتا ہے کہ اس کے حلقے میں کسی مسکین بچی کو جہیز فنڈز کے 20 ہزار روپے ملے ہوں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت زکوۃ فنڈز کے پیسے ہڑپ کر رہی ہے ۔ کسی بھی مستحق کو زکوۃ فنڈز لینے کے لیے پہلے نصف رقم رشوت میں دینی پڑتی ہے ۔ انہوں نے محکمہ ایکسائز کو آڑے ہاتھوں لیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ وزیر کو یہ محکمہ الاٹ کر دیا گیا ہے ۔ مکشی کمار چاولہ کبھی کچی شراب پینے اور کبھی پکی شراب پینے کے ازخود نوٹس کیس میں پھنس جاتے ہیں ۔ انہوں نے اسپیکر سندھ اسمبلی سے سوال کیا کہ سندھ اسمبلی کی پرانی بلڈنت کی تزئین و آرائش پر مزید کتنا خرچ کیا جائے گا ۔ اسپیکر آغا سراج درانی نے کہا کہ پرانی اسمبلی کی عمارت کے کسی حصے کو نہیں چھیڑا گیا ۔ بالکونیوں کا فرش بیٹھ گیا تھا ۔ اس کی مرمت کرائی گئی ہے ۔ آغا سراج درانی نے کہاکہ اسمبلی کے ترقیاتی پروگرام کی منظوری فنانس کمیٹی دیتی ہے جس میں سید سردار احمد بھی شامل ہیں ۔ اسپیکر سندھ اسمبلی نے کہاکہ اگر کوئی بھی رکن چاہے تو وہ اسمبلی کے اخراجات کی انکوائری کر سکتا ہے ۔ خواجہ اظہار الحسن نے کہاکہ کمیونٹی ڈویلپمنٹ فنڈز کی ایک پائی بھی اپوزیشن ارکان کو نہیں ملی جبکہ حکومتی ارکان کو چار چار کروڑ روپے فراہم کر دئیے ۔ حکومت نے نئے بجٹ میں کمیونٹی دویلپمنٹ کے لیے 20 ارب روپے مزید مختص کر دیئے ہیں ۔ گذشتہ سال کی طرح یہ رقم بھی پوری خرچ کر دی جائے گی ۔ ہمارے ارکان کے حلقوں میں کمیونٹی ڈویلپمنٹ فنڈز کا ایک روپیہ بھی خرچ نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ بھر کے مسائل پر میں نے شکایات وزیر اعلیٰ سندھ کو ارسال کی ہیں ۔ انہوں نے دادو کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ دادو ضلع کے بعض علاقوں میں صحت کی سہولیات کا نام و نشان نہیں ہے ۔ آج تک حکومت نے ایک ڈسپینسری بھی نہیں دی ہے ۔ خواجہ اظہار الحسن نے ایوان میں فائل لہراتے ہوئے بتایا کہ میں نے وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو سندھ کے مسائل پر خوط لکھے ۔ مجھے ان سے محبت ہے ۔ مسائل کی نشاندہی کے لیے انہیں شواہد کے ساتھ خط لکھتا رہتا ہوں ۔ ٹرانسپورٹ کا محکمہ مسلسل پیپلز پارٹی کے پاس رہا ہے ۔ ہر بار ترقیاتی پروگرام سے متعلق جھوٹ سے کام لیا جاتا ہے ۔ محکمہ ٹرانسپورٹ نے 9 برس میں کراچی کے شہریوں کو بسوں سے چنگچی رکشوں پر منتقل کرنے کے سوا کچھ کام نہیں کیا ۔ محکمہ ٹرانسپورٹ بدترین نااہلیت کا شکار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں جنرل مشرف کا اتحادی ہونے کا طعنہ دیا گیا ۔ ناصر شاہ پکے مکان سے شیشے کے گھر میں آئے ہیں ۔ سکھر میں ناظم کون تھا ۔ شاید وہ بھی ہم تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ناصر شاہ اور جام شورو کے منہ سے مشرف کے اتحادی ہونے کا طعنہ زیب نہیں دیتا ۔ ناصر شاہ نے کہاکہ اگر پیسے لندن نہ بھیجے جاتے تو کے فور منصوبہ کراچی میں مکمل ہو جاتا ۔ خواجہ اظہار نے کہاکہ میں کہتا ہوں اگر ایف آئی اے دو تین اور بیگ پکڑ لیتی تو کے ۔ 4 تو کیا کراچی سرکلر ریلوے سمیت کئی ترقیاتی منصوبے مکمل ہو جاتے ۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم نے پیپلز پارٹی کے خلاف نہیں سندھ حکومت کی بیڈ گورننس کے خلاف وائٹ پیپر جاری کیا ہے ۔ ہمارا وائٹ پیپلز پیپلز پارٹی کی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان اور کراچی والوں کا اصل مقدمہ ہے ۔ خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ لیاری میں 10 سالوں میں 6 ہزار ارب روپے خرچ کرنے کے باوجود پانی نہیں ہے ۔ انہوں نے تجویز دی کہ سندھ اسمبلی کے اسٹاف کو بھی بجٹ کی تیاری کا خصوصی الاؤنس دیا جائے ۔ دیگر محکموں کی طرح اسمبلی اسٹاف کو بھی الاؤنس ملنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کے حقوق کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے صوبائی محتسب کے اپنے دفتر میں موجود خواتین غیر محفوظ ہیں ۔ خواجہ اظہار الھسن نے جمعرات کو سندھ بجٹ پر ڈیڑھ گھنٹے سے زائد اظہار خیال کیا اور اپنی تقریر کا اختتام دعائیہ نظم پر کیا ۔ انہوں نے تقریر کے اختتام پر کہا کہ اگر ہم پر یہی حکمران دوبارہ مسلط ہوں گے تو ہم اپنے ہی گناہوں کی معافی مانگیں گے ۔ بجٹ پر ایک سو ارکان نے اظہار خیال کیا ۔ قائد ایوان وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ بجٹ پر تقریر کرنے والے 100 ویں رکن اور خری رکن تھے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول