پشاور،ریپڈ بس سروس منصوبہ فروری 2018ء میں مکمل ہو گا:پرویز خٹک

پشاور،ریپڈ بس سروس منصوبہ فروری 2018ء میں مکمل ہو گا:پرویز خٹک

پشاور(نیوزرپورٹر )خیبر پختونخوا اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں شروع ہوا صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے خیبر پختونخوا کے حسابات سے متعلق آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی پانچ رپورٹس برائے سال 2014-15ء اسمبلی میں پیش کیں وزیر خزانہ کی تحریک پر سپیکر اسد قیصر نے تمام رپورٹس پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے حوالے کیں ضمنی بجٹ پر عام بحث کیلئے نام دینے والے ارکان کی غیر حاضری پر سپیکر اسد قیصر نے اگلے روز کا ایجنڈا نمٹانے کا فیصلہ کیا صوبائی وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی ایڈوکیٹ نے صوبائی اسمبلی کے اخراجات کیلئے 5 کروڑ 15 لاکھ 50 ہزار روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا ایوان نے ضمنی مطالبہ زر کی منظوری دے دی وزیر اعلی کی جانب سے وزیر قانون نے محکمہ تظم ونسق عمومی کے اخراجات کے سلسلے میں 340 روپے کا ضنمی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا ارکان کی جانب سے کٹوتی کی تحاریک واپس لینے پر ایوان نے ضمنی مطالبہ زر کی منظوری دے دی ،وزیر ،خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے محکمہ خزانہ ،خزانہ جات اورلوکل فنڈ آڈٹ کے اخراجات کیلئے ایک سو چالیس روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا صوبائی وزیر قانون نے وزیر اعلیٰ کی جانب سے محکمہ منصوبہ بندی وترقی وشعبہ شماریات کے اخراجات کیلئے مبلغ بیس روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا سینئر وزیر شہرام ترکئی نے محکمہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اخراجات کیلئے مبلغ بیس روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا صوبائی وزیر علی امین گنڈہ پور نے محکمہ مال گزاری واملاک کے اخراجات کیلئے مبلغ 60 روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا صوبائی وزیر میاں جمشید الدین نے محکمہ آبکاری ومحاصل کے اخراجات کیلئے 3 کروڑ 57 لاکھ 78 ہزار روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا ایوان نے ضمنی مطالبہ زر ایوان کی منظوری دے دی ،وزیر قانون امتیاز شاہد نے وزیر اعلیٰ کی جانب سے محکمہ داخلہ وقبائلی امور کے اخراجات کے سلسل میں 56 کروڑ 19 لاکھ 74 ہزار روپے کا ضمنی مطالبہ زر ایوان میں پیش کیا ایوان نے مطالبہ زر کی منظوری دے دی ،وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے بجٹ اور ضمنی بجٹ پر عام بحث کے جواب میں ایوان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2013ء میں جب ہماری حکومت بنی تو صوبے میں دہشت گردی ،بھتہ خوری ،ٹارگٹ کلنگ کی صورت حال کے باعث لوگ سرمایہ نکال کر دوسری جگہوں میں منتقل ہورہے تھے تاہم عوام اور سیکورٹی فورسز نے قربانیاں دے کر امن بحال کیا اور اب صوبے دوبارہ ترقی کی جانب گامزن ہے انہوں نے کہا کہ ہم نے ڈاکٹروں کی کمی پوری کی انہیں پروموٹ کیا اور تنخواہیں چار گناہ بڑھا دیں آج صوبے کے ہر کونے میں ڈاکٹر موجود ہیں تعلیم اور صحت کے شعبے میں مانیٹرنگ سسٹم شروع کیا ہسپتالوں کی حالت بہتر کی اورقانون سازی کی بڑے ہسپتالوں کو آٹا نوحی دی بااختیار کیا اتھارٹیزجن کے اچھے اثرات سامنے آرہے ہیں ایمرجنسی میں ٹریٹمنٹ مفت کردی اس کیلئے ہر سال ایک ارب روپ کے فنڈز دیئے جارہے ہیں خراب مشینری کی بہتری وبحالی شروع کی جس پر 14 ارب روپے خرچ ہوں گے انہوں نے کہا کہ 3 میڈیکل کالجوں کے قیام پر کام جاری ہے اگلے مرحلے میں آر ایچ سیز کو بااختیاز بنایا جائے گا ہر شعبے میں بھرتیاں میرٹ پر کی گئیں انہوں نے کہا کہ ہم نے صوبے سے اختیارات مقامی حکومتوں کو منتقل کئے انہوں نے کہا کہ سیاحت کے فروغ پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے نتھیاگلی پر ڈیڑھ ارب روپے خرچ کئے گئے کالام کی بہتری پر 70 کروڑ کے فنڈز لگ رہے ہیں انہوں نے کہا کہ صوبے میں 17 انڈسٹریل زون اور انڈسٹریل پارکس بن رہے ہیں انہوں نے کہا کہ سی پیک کے باعث خیبر پختونخوا سب سے زیادہ انڈسٹری کیلئے فیسزیبل بن گیا انہوں نے کہا کہ آئندہ سال سات آٹھ سمینٹ کے کارخانے لگ جائیں گے انہوں نے کہا کہ سی پیک میں گریٹر پشاور ریل ،گلگت چترال روڈ ،1900 میگا واٹ بجلی اور انڈسٹریل پارکس کی سکیموں پر کام ہوگا انہوں نے کہا کہ پشاور ریپڈ بس سروع پر اگست میں کام شروع ہوگا اور فروری تک مکمل ہوگا انہوں نے کہا کہ ہم نے مشترکہ جدوجہد کی اور وفاق سے 88 ارب لینے میں کامیاب رہے جس میں 18 ارب سابقہ حکومت کا قرضہ ادا کیا اور 70 ارب قسطوں ممیں مل رہا ہے انہوں نے کہا کہ خالص منافع کو 6 ارب سے 18 ارب تک لے گئے ۔

 

مزید : کراچی صفحہ اول