زہریلی شراب سے ہلاکتیں‘ 6روز بعد نامعلوم شراب فروش کیخلاف مقدمہ

زہریلی شراب سے ہلاکتیں‘ 6روز بعد نامعلوم شراب فروش کیخلاف مقدمہ

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)زہریلی شراب پینے سے ہلاکتیں،پولیس محمود کوٹ نے 6روز بعدنا معلوم شراب فروش کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرکے شراب پینے سے بچ جانے والے ملزم سمیت کنٹرول شیڈ کے ملازمان گرفتار کرلئے،زہریلی شراب سے مرنے والے کوٹ ادو کے رہائشی کی نماز جنازہ اداکردی گئی،اس بارے تفصیل کے مطابق سینما روڈ کوٹ ادو کے رہائشی منیر احمد دایہ جس نے تھانہ محمود (بقیہ نمبر44صفحہ12پر )

کوٹ کے علاقہ موضع بھری ہوگ میں پولٹری کنٹرول شیڈ بنایا ہوا تھا جہاں کوٹ ادو کا رہائشی عبدالعزیز دایہ ملازم تھا،10جون کی شب عبدالعزیز دایہ کوٹ ادو سے دیسی شراب کی ڈیڑھ لیٹر کی بوتل لیکر گیا اور کنٹرول شیڈ موضع بھری ہوگ پر منیر احمد دایہ سمیت عبدالعزیز دایہ اور اس کے دوستوں عبدالرشید سہو اور ظفر اقبال سہو نے شراب کی محفل سجائی،شراب پینے کے بعد چاروں کی حالت خراب ہوگئی تھی جنہیں طبعی امداد کے بعد نشتر ہسپتال ملتان منتقل کیا گیا تھا جہاں 12جون کے روز عبدالرشید سہول جبکہ 13جون کے روز عبدالعزیز دایہ وفات پا گئے تھے جبکہ منیر احمد دایہ مالک کنٹرول شید نشتر میں زیر علاج ہے جہاں اسکی حالت تاحال تشویش ناک ہے جبکہ شراب پینے والے جدتھے ظفر اقبال سہو کی حالت سجھلنے پر اسے نشتر ہسپتال سے فارغ کردیاگیا،پولیس نے ہلاکتوں کے بعد گزشتہ روز کنٹرول شیڈ پر چھاپہ مارکر شراب پی کر بچ جانے والے ظفر اقبال سہو سمیت دیگر ملازموں سپر وائزر شیڈ نذر حسین سہو،ملازمان فاروق سہو اور طارق دایہ کو حراست میں لیکر ملزمان کے خلاف6روز بعد مقدمہ نمبر240/17زیر دفعہ 337-302جی کے تحت نامعلوم شراب فروش کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے ،شراب سے جاں بحق ہونے والے عبدالعزیز دایہ کی گزشتہ روز نماز جنازہ ادا کردی گئی ہے.

مزید : ملتان صفحہ آخر