اگر میں نواز شریف ہوتا تو جے آئی ٹی کے سامنے پیش نہ ہوتا، میاں صاحب کٹھ پتیلوں کے ناچ کو اچھی طرح جانتے ہیں:خورشید شاہ

اگر میں نواز شریف ہوتا تو جے آئی ٹی کے سامنے پیش نہ ہوتا، میاں صاحب کٹھ پتیلوں ...
اگر میں نواز شریف ہوتا تو جے آئی ٹی کے سامنے پیش نہ ہوتا، میاں صاحب کٹھ پتیلوں کے ناچ کو اچھی طرح جانتے ہیں:خورشید شاہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ اگر میں نواز شریف کی جگہ وزیراعظم ہوتا توجے آئی ٹی کے سامنے نہ جاتا کٹھ پتلیوں کا ناچ کون نچا رہا ہے اور کون ناچ رہا ہے مجھے پتہ ہے میاں صاحب بھی کٹھ پتلیوں کے ناچ کو اچھی طرح جانتے ہیں لکھی ہوئی تقریر پڑھنے سے مجھے لگا نواز شریف کے پاس کوئی سچائی نہیں سچائی ان کو لکھ کر دیاگیا ہے کہ یہ پڑھ لو یہ سچائی ہے آئین اور قانون میں ایسی کوئی شق نہیں کہ اگر قومی اسمبلی ختم ہو جائے تو صوبائی اسمبلی بھی ختم ہو سکتی ہے میاں صاحب بادشاہ اور بھولے آدمی ہیں وہ کبھی کبھی کسی اورکو بھولا بنانے کے لیے بھولا بن جاتے ہیں۔

خیبر پختونخواہ نے ینگ ڈاکٹرز کے دھرنے میں میری کوریج کرنے والے صحافیوں کو رپورٹنگ سے روک دیا: ریحام خان

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف خورشید شاہ نے سندھ اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کے ساتھ (ن) لیگ نے جو رویہ کیا ہے وہ باعث شرم اور باعث افسوس ہے اگر ملک میں اخلاقی قدریں ہوں تو وزیراعظم کے جے آئی ٹی میں بطور ملزم پیش ہونے سے ہر چیز ختم ہوتی ہے عوامی عدالت میں جانے کا کہنا باتیں ہیں ابھی آﺅ عوامی عدالت لگاﺅ مزہ آ جائیگا۔ مجھے پتہ ہے کٹھ پتلیوں کے ناچ پر کون ناچ رہا ہے اور کون نچا رہا ہے۔ میاں صاحب مجھ سے بہتر جانتے ہیں۔ ان کو پتہ ہے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم جے آئی ٹی میں گئے ہمیں پتہ نہیں، وہاں کیا باتیں ہوئی ہیں مگر ہم اندازہ لگا سکتے ہیں کہ نوازشریف نے قوم سے مخاطب ہو کر باتیں کی ہیں یا پارلیمنٹ کے اندر ان لوگوں نے جو باتیں کی ہیں۔ یقینا سوالات جوابات ان کے اندر ہی ہونگے۔

آئی سی سی چیمپینز ٹرافی کے فائنل میں پہنچنے والے کپتان سرفراز احمد نے لندن کی سڑکوں پر اپنے بیٹے کو سیر کراتے ہوئے ایسا کام کردیا کہ آپ بھی سبحان اللہ کہہ اٹھیں گے ،ویڈیو نے سوشل میڈ یا پر تہلکہ مچا دیا

خورشید شاہ کا مزید کہنا تھا کہ میاں صاحب بادشاہ اور بھولے آدمی ہیں۔ وہ کبھی کبھی کسی اور کو بھولا بنانے کے لئے بھولا بن جاتے ہیں۔ ایسا ہوتا ہے، وزیراعظم اتنے ہوشیار نہیں مگر ان کے پاس ٹیم ہے جو انہیں ہوشیار بنانے کی کوشش کرتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی قطری شہزادے سے تحقیقات کے لئے قطر جا کر خود کو ڈاون گریڈ کر رہی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ اگر کوئی نہ آئے تو عدالتوں کو جانا پڑے گا۔ جب آپ اداروں کو اس طرح برا بھلا کہیں گے تو وہ کمزور ہوں گے اور ریاست بھی کمزور ہو گی تو وہ پھر ریاست بنانا ری پبلک بن جاتی ہے جس کے پاس طاقت ہو گی وہ اس کے بل بوتے پر چلے گا اور ہر آدمی اپنی قوت پر آگے چلتا ہے۔ پاکستان کو اگر بنانا ری پبلک بنانا ہے جو بننے جا رہی ہے کوئی ان کو کہنے والا نہیں کوئی الیکشن لینے کے لئے تیار نہیں۔ عدلیہ کو بے عزت کرو کوئی پوچھنے والا نہیں عدلیہ ججز کو دھمکی دو کوئی پوچھنے والا نہیں ججز کے بچوں کو زمین تنگ کرنے کی دھمکی دی جائے جس میں مافیا بھی کہا جائے اور ان کو تنگ بھی کرو اس کے بعد بھی انہیں نہ کہے ان کی زمین بھی تنگ کی جائے اس پر بھی کچھ نہ کہے تو اس کو ہم کیا کہیں گے۔ بنانا ری پبلک ہی کہہ سکتے ہیں اگر مﺅکل میں کوئی اخلاقی قدریں ہوں تو جے آئی ٹی میں پیش ہونے سے ہر چیز ختم ہو جاتی ہے۔ یہ اخلاقی قدروں کی بات ہے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم صادق اور امین اس وقت نہیں رہے جب ان پر الزام لگا میں نوازشریف کو تب مانوں گا وہ کل اسمبلی توڑ کر عوامی عدالت میں چلا جائے۔ تب میں کہوں گا اس کے پاس سچائی ہے تب کہوں گا اس میں سیاسی ویڑن ہے۔ البتہ بولنا اور بات بھول جانا عوامی عدالت کہتا میں جے آئی ٹی میں نہیں جاتا۔ میں عوامی عدالت جاتا ہوں اسمبلی تحلیل کرتا ہوں۔ عوام کے پاس جا رہا ہوں۔ بڑی عدالت میں جا رہا ہوں۔ یہ کہنے کی باتیں ہیں۔ ابھی آو¿ عوامی عدالت لگاو¿، مزہ آ جائے گا۔ ایک سوال پر کہ پنجاب کے پی پی رہنما پی ٹی آہی میں شامل ہو رہے ہیں۔ خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ آخری کھلاڑی بڑا اچھا کھیلتا ہے۔ وہ سکسر مارتا ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں