تھانوں میں دربدر کی ٹھوکریں ،شہریوں کا اندراج مقدمہ کے لئے عدالتوں کا رخ

تھانوں میں دربدر کی ٹھوکریں ،شہریوں کا اندراج مقدمہ کے لئے عدالتوں کا رخ
تھانوں میں دربدر کی ٹھوکریں ،شہریوں کا اندراج مقدمہ کے لئے عدالتوں کا رخ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگار)تھانوں میں دربدر کی ٹھوکریں کھانے کے بعدشنوائی نہ ہونے پرشہری عدالتوں کا رخ کرنے لگے ،اسی وجہ سے اندراج مقدمہ کی درخواستیں دائر کرنے کے رجحان میں اضافہ ہونے لگاہے ،انصاف کے متلاشی سائلین سیشن کورٹ میں روزانہ تقریباً150سے 200اندراج مقدمہ کی درخواستیں مارکنگ برانچ میں دائر کرنے لگے ہیں ۔

آئی سی سی چیمپیئنز ٹرافی،پاکستانی ٹیم کو فتح حاصل کرنے پر کتنی انعامی رقم ملے گی؟تفصیلات سامنے آگئیں

تفصیلات کے مطابق پولیس کی جانب سے مقدمات جلددرج نہ کرنامعمول بن گیاہے جس کی وجہ سے سائلین کی بڑی تعدادنے پولیس سے تنگ آکرعدالت کادروازہ کھٹکھٹانے پر مجبور ہیں ،واضح رہے کہ سائلین کی درخواستیں اتنی زیادہ ہوگئی ہیں کہ عدالتی اہلکاروں کے پاس جگہ کم پڑگئی ہے،اندراج مقدمہ کی درخواستیں زیادہ ہونے پرسیشن جج نے ایڈیشنل سیشن ججوںکی تعدادبھی 4سے بڑھا کر7کررکھی ہے۔اس حوالے سے سابق سیکرٹری لاہور بار کامران بشیرمغل ، مدثر چودھری ، مرزا حسیب ،مجتبی چودھری کا کہنا ہے کہ پولیس عدالتی احکامات پرعمل درآمدنہیں کرتی ہے۔وکلاءکا کہنا تھا کہ اس ضمن میں ایڈیشنل سیشن ججزکوتوہین عدالت کے نوٹس جاری کرنے کااختیاردینے کی ضرورت ہے،انہوں نے مزید کہا کہ تھانوں میں آنے والی درخواستوں پرقانون کے مطابق فوری مقدمات درج ہونے چاہیے تاکہ شہریوں کوجلدانصاف فراہم کیاجاسکے ۔

مزید : لاہور