خود کو نیب کا چیئرمین ظاہر کر کے شہریوں سے فراڈ کرنے اور دھمکانے والے ملزم کی درخواست ضمانت مسترد

خود کو نیب کا چیئرمین ظاہر کر کے شہریوں سے فراڈ کرنے اور دھمکانے والے ملزم کی ...
خود کو نیب کا چیئرمین ظاہر کر کے شہریوں سے فراڈ کرنے اور دھمکانے والے ملزم کی درخواست ضمانت مسترد

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگار)ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ نے خود کو نیب کا چیئرمین ظاہر کر کے شہریوں سے فراڈ کرنے اور دھمکانے کے مقدمہ میں ملوث ملزم کو ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست مسترد کر دی ۔

تھانوں میں دربدر کی ٹھوکریں ،شہریوں کا اندراج مقدمہ کے لئے عدالتوں کا رخ

جوڈیشل مجسٹریٹ فاروق اعظم سوہل نے ملزم بشارت عزیز کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، ملزم کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ایف آئی اے سائبر کرائم سرکل نے ملزم کو مقدمہ میں بے بنیاد ملوث کیا ہے، ملزم بشارت عزیز نے خود کو چیئرمین نیب ظاہر کر کے کسی کو بھی ای میل نہیں کی اور ایف آئی اے کے پاس ملزم کیخلاف کوئی ٹھوس شواہد موجود نہیں، ملزم کے وکیل نے مزید دلائل دیئے کہ ملزم کے جسمانی ریمانڈ کے دوران ایف آئی اے نے ملزم سے برآمدگی کر لی ہے اور ملزم سے مزید کوئی برآمدگی نہیں کروائی جانی ،ملزم کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا جائے،پراسکیوشن نے موقف اختیار کیا کہ ملزم نے خود کو نیب کا چیرمین ظاہر کر کے پراجیکٹ ڈائریکٹر بہاﺅ الدین زکریا یونیورسٹی کے خلاف ای میل کیں اور یونیورسٹی کے پراجیکٹ ڈائریکٹر پر من گھڑت الزام بھی لگائے، پراسکیوشن کی جانب سے مزید موقف اختیار کیا گیا کہ ملزم بہاالدین زکریا یونیورسٹی کے ڈاکٹر شفیق کو ای میل کے ذریعے بلیک میل بھی کرتا رہا ہے اور ملزم کے لیپ ٹاپ اور ای میل اکاﺅنٹ کا ڈیٹا ثبوت کے طور پر موجود ہے ،ملزم بشارت عزیز کو ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست خارج کی جائے، عدالت نے فریقین کے دلائل سننے اور ریکارڈ کا جائزہ لینے کے بعد خود کو نیب کا چیئرمین ظاہر کر کے شہریوں سے فراڈ کرنے اور دھمکانے کے مقدمہ میں ملوث ملزم کو ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست مسترد کر دی ۔

مزید : لاہور